The news is by your side.

Advertisement

مسلم لیگ ن کے نائب صدر اور رہنما پی پی میں شامل

کراچی: مسلم لیگ ن کے نائب صدر سمیت متعدد اہم رہنماؤں نے اپنی پارٹی کو خیر باد کہتے ہوئے پیپلزپارٹی میں شمولیت کا اعلان کردیا۔

تفصیلات کے مطابق عام انتخابات سے قبل سیاسی رہنماؤں اور کارکنان کی جانب سے پارٹیاں بدلنے کا سلسلہ زور و شور سے جاری ہے، حکومتی جماعت مسلم لیگ ن کے اراکین پی پی میں شامل ہوگئے۔

پیپلزپارٹی میڈیا سیل کے مطابق مسلم لیگ ن کے خیبرپختونخواہ سے تعلق رکھنے والے رہنماؤں نے  شریک چیئرمین آصف علی زدراری سے ملاقات کی اور پی پی میں شمولیت کا اعلان کیا۔

مسلم لیگ چھوڑ کر پی پی میں شامل ہونے والے رہنماؤں میں خیبرپختونخواہ کے نائب صدر اور ن لیگ کے امیدوار امان اللہ خان، جنرل سیکریٹری نوشہرہ عثمان خان شامل ہیں۔

مزید پڑھیں: بلوچستان، مسلم لیگ ن کے جنرل سیکریٹری اور ساتھی بی اے پی میں شامل

ترجمان پیپلزپارٹی کے مطابق مسلم لیگ ن کے نائب ناظمین فرمان دتہ خان اور ڈاکٹر اصغر نے بھی بھٹو نظریے سے متاثر ہوکر آئندہ سیاسی جدوجہد پی پی کے پلیٹ فارم سے جاری رکھنے کا اعلان کیا۔

خیال رہے کہ 2 مارچ کو مسلم لیگ ن کے حلقہ 81 سے منتخب ہونے والے  رکن قومی اسمبلی نثار احمد جٹ  ساتھیوں  کےساتھ تحریک انصاف میں شامل ہوئے تھے۔ دریں اثناء فروری میں گوجرانوالہ سے منتخب ہونے والے موجودہ اور سابق اراکین قومی و صوبائی اسمبلی میاں طارق اور میاں مظہر نے ساتھیوں سمیت تحریک انصاف میں شمولیت اختیار کی تھی۔

واضح رہے کہ  کچھ ماہ سے بلوچستان میں مسلم لیگ ن کو کئی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، گذشتہ  برس بلوچستان کے سابق وزیراعلیٰ نواب ثناء اللہ زہری کے خلاف تحریک عدم اعتماد اسمبلی میں پیش کی جانی تھی تاہم اُس سے قبل ہی انہوں نے مستعفیٰ ہونے کا اعلان کردیا تھاجس کے بعد اپوزیشن کے مشترکہ امیدوار عبدالقدوس بزنجو بلوچستان کے نئے وزیراعلیٰ بنے تھے۔

یہ بھی پڑھیں: مسلم لیگ ن کے ایم پی اے چوہدری فیصل فاروق چیمہ پی ٹی آئی میں شامل

حکمراں جماعت مسلم لیگ ن نے ثناء اللہ زہری کو عہدے سے ہٹانے کو جمہوریت کے خلاف سازش قرار دیتے ہوئے الزام عائد کیا تھاکہ اس کے پیچھے پیپلزپارٹی کا ہاتھ کارفرما ہے۔

بعد ازاں بلوچستان سے تعلق رکھنے والے رہنماؤں اور دیگر بااثر سیاسی افراد نے نئی جماعت ’بلوچستان عوامی پارٹی‘ کے نام سے بنانے کا اعلان کیا جس کے بعد صوبے سے تعلق رکھنے والے اراکین نے نئی جماعت میں شمولیتوں کا سلسلہ شروع کیا۔

گذشتہ ماہ اپریل کی 6 تاریخ کو بلوچستان سےمنتخب ہونے والے مسلم لیگ کے 2 سابق وفاقی وزراء جام کمال، دوستین ڈومکی اور رکن قومی اسمبلی خالد کمال مگسی نے پارٹی چھوڑنے کا اعلان کرتے ہوئے بلوچستان عوامی پارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں