The news is by your side.

Advertisement

حاملہ خاتون کو قتل کرنے والے مجرم کو پھانسی دینے کا حکم برقرار

اسلام آباد : اسلام آباد ہائی کورٹ نے حاملہ خاتون کو قتل کرنے والے مجرم سمیع اللہ کو پھانسی دینے کا حکم برقرار رکھا ، حاملہ بیوی کو چار بچوں کی موجودگی میں قتل کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ میں حاملہ خاتون کو قتل کرنے کے کیس میں مجرم کی سزا کیخلاف اپیل پر سماعت ہوئی ، عدالت نے سمیع اللہ کی جانب سے اپیل خارج کردی اور ٹرائل کورٹ کا پھانسی دینے کا حکم برقرار رکھا۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ اور جسٹس بابر ستار نے فیصلہ تحریر کیا، تحریری فیصلہ میں کہا گیا کہ حاملہ بیوی کو چار بچوں کی موجودگی میں قتل کیا گیا، بشرہ نامی خاتون کو اسکے خاوند نے چاقو کے وار سے قتل کیا۔

عدالتی فیصلے کے مطابق سمیع اللہ کی جانب سے وکیل نے موقف اپنایا کہ مجرم کا ذہنی توازن درست نہ تھا، ذہنی طور پرپتہ نہ چلنے پر بیوی کو قتل کیا گیا۔

فیصلے میں کہا کہ سمیع اللہ کی جانب سے جو کیا گیا وہ جرم ہے لہذا اس پر رحم نہیں کیا جاسکتا، سمیع اللہ کی اپیل کو خارج کی جاتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں