The news is by your side.

Advertisement

انسانوں میں کورونا وائرس کی منتقلی کا ایک اور ذریعہ سامنے آگیا

کراچی ؛مائیکروبائیولوجسٹ ڈاکٹر فرحان عیسیٰ کا کہنا ہے کہ مریضوں کو صحتیابی پر گلدستہ دینا کورونا وائرس کی منتقلی کا باعث بن سکتا ہے، شہریوں سے درخواست ہے مریضوں کو پھول نہ پیش کئے جائیں۔

تفصیلات کے مطابق مائیکروبائیولوجسٹ ڈاکٹر فرحان عیسیٰ نے کرونا وائرس کے پھیلنے کے حوالے سے کہا ہے کہ گلدستہ بھی وائرس کے پھیلنے کا ذریعہ بن سکتا ہے، کورونا پھولوں کے اوپر زندہ رہ سکتاہے۔

ڈاکٹر فرحان عیسیٰ کا کہنا تھا کہ مریضوں کو صحتیابی پر گلدستہ دینا وائرس کی منتقلی کا باعث بن سکتا ہے،شہریوں سے درخواست ہے مریضوں کو پھول نہ پیش کئے جائیں۔

مائیکرو بائیولوجسٹ نے کہا کہ کورونا وائرس فضا میں بھی زندہ رہ سکتا ہے اور ٹھنڈی جگہ پر9دن تک وائرس رہتاہے۔

یاد رہے امریکی حکومت اور سائنس دانوں کی جاری کردہ مشترکہ رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ کرونا وائرس کھلی ہوا میں گھنٹوں اور کسی شے کی سطح پر دو سے تین دن تک زندہ رہنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق کرونا وائرس ایک انسان سے دوسرے کو منتقل ہوتا ہے، ماہرین نے تحقیق کے دوران متاثرہ افراد کے زیر استعمال نیبولائزر سے نمونے حاصل کر کے انہیں فضا میں چھوڑا، جس سے یہ معلوم ہوا کہ تین گھنٹے تک وائرس ہوا میں موجود رہا اور پھر خود ختم ہوگیا۔

رپورٹ میں بتایا گیا جب ان نمونوں کو دیگر اشیاء کی سطح پر چھوڑا گیا تو نتائج خوفناک صورت میں سامنے آئے، ماہرین کے مطابق تانبے کی دھات پر وائرس کے نمونے چار گھنٹے، گتے پر 24 جبکہ پلاسٹک اور اسٹیل کی دھات کی سطح پر یہ دو سے تین روز تک زندہ رہ سکتا ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں