The news is by your side.

Advertisement

مقبوضہ کشمیر کو غیر قوجی علاقہ قرار دیا جائے،صدر ممنون حسین

مظفر آباد: آزاد کشمیر قانون ساز اسمبلی اور کشمیر کونسل کا مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صدر پاکستان ممنون حسین نے تحریک آزادی کشمیر میں جانیں قربان کرنے والوں کو سلام تحسین پیش کیا۔

صدرممنون حسین کا کہنا تھا کہ نوجوان حریت پسند رہنما برہان وانی کی شہادت کے بعد کشمیرکی تحریک نئے دور میں داخل ہوگئی ہے،کشمیری عوام کے حوصلے اور جوش و جذبےکی دنیا میں مثال نہیں ملتی۔

صدر پاکستان نے اپنے خطاب میں اس عزم کا بھی اظہارکیا کہ مقبوضہ کشمیرکےنہتے اوربہادرعوام کو کبھی تنہا نہیں چھوڑیں گے۔

انہوں نے عالمی قیادت کو مخاطب کر کے کہا کہ امید ہے عالمی ضمیر اب خاموش نہیں رہے گا اور مظالم کے باوجود انسانی حقوق کی علمبردار تنظیمیں خاموش ہیں،انسانی حقوق کی تنظیمو ں کو اجازت نہ دی گئی تومقبوضہ کشمیر کی صورتحال مزید سنگین ہوگی ہے۔

صدر ممنون حسین نے کہا کہ کنٹرول لائن کے اطراف کشمیری بھارتی جارحیت کا شکار رہتے ہیں جمہوریت کےدعوےداروں نے کشمیریوں سے جینے کا حق چھین لیا سو سے زائد افراد کو پیلٹ گنوں سے آنکھوں سے محروم کیا جا چکا۔

صدر پاکستان نے مزید کہا کہ کشمیریوں کی حمایت ہمارے خون میں شامل ہےمقبوضہ کشمیر میں عوام کے جان و مال ہر وقت خطرے میں گھرےہیں برہان وانی کی شہادت سے جدوجہد کشمیر نئے مرحلے میں داخل ہوگئی۔

طویل عرصے بعد آزاد کشمیر کی قیادت ذہین دانشمندلوگوں کے ہاتھ میں ہے صدر اور وزیراعظم آزاد کشمیر عوام کی خدمت کا سچا جذبہ رکھتے ہیں،جمہوریت کےدعوے داروں نے کشمیریوں سے عبادت کا حق بھی چھین لیا۔

اپنے خطاب کے آخر میں صدر پاکستان نے مطالبہ کیا کہ مقبوضہ کشمیر میں تمام سیاسی قیدیوں کو رہا کر کے کشمیریوں کے خلاف کالے قانون کو واپس لیا جائے اور کشمیر کو غیر فوجی علاقہ قرار دے کرمقبوضہ کشمیر میں کرفیو اور آتشیں اسلحہ کا استعمال بند کیا جائے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں