ہاتھ کی کڑھائی سے قرآن پاک لکھنے والی خاتون کو صدارتی ایوارڈ دینے کا مطالبہ naseem akhtar
The news is by your side.

Advertisement

ہاتھ کی کڑھائی سے قرآن پاک لکھنے والی خاتون کو صدارتی ایوارڈ دینے کا مطالبہ

لاہور: اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی نے ہاتھ کی کڑھائی سے قرآن پاک لکھنے والی خاتون نسیم اختر کو صدارتی ایوارڈ سے نوازنے کا مطالبہ کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی نے ہاتھ کی کڑھائی سے قرآن پاک لکھنے والی خاتون نسیم اختر کو صدارتی ایوارڈ دینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی حکومت کے مشکور ہیں جنہوں نے اس خاتون کی حوصلہ افزائی کی۔

اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی اپنی فیملی کے ہمراہ خاتون کی حوصلہ افزائی کرنے گئے اور کہا کہ میں صدر پاکستان عارف علوی سے مطالبہ کروں گا کہ وہ ان خاتون کو صدارتی ایوارڈ سے نوازیں۔

پرویز الہٰی نے کہا کہ نسیم اختر نے ہاتھ کی کڑھائی سے قرآن مجید لکھ کر جہاں اپنی عقیدت کا اظہار کیا وہیں پاکستان کا نام بھی روشن کردیا، ہمیں ایسے لوگوں کی حوصلہ افزائی کرنی چاہئے تاکہ وہ اپنے ہنر کو مزید نکھار سکیں۔

نسیم اختر نے کہا کہ میرے لیے یہ اعزاز کی بات ہے کہ میرے لکھے ہوئے قرآن کی کاپی مدینہ کی لائبریری میں رکھی گئی، حکومت کو چاہئے کہ ایک ادارہ قائم کریں جہاں لوگ اپنے اس ہنر کو نکھار سکیں۔

مزید پڑھیں: ہاتھ کی کڑھائی سے پورا قرآن مجید تحریر کرنے والی پاکستانی خاتون

واضح رہے کہ پاکستانی خاتون نسیم اختر نے کڑھائی سے کپڑے پر قرآن پاک لکھنے کا اعزاز حاصل کیا تھا، انہوں نے کڑھائی سے 724 صفحات لکھے جن کا وزن 55 کلو گرام ہے۔

خیال رہے کہ نسیم اختر نے دو بچے ہیں اور وہ ملازمت کرتی تھیں دوران ملازمت وہ بچیوں کو قرآن پاک کی تعلیم بھی دیتی تھیں، اس نیک کام کا آغاز انہوں نے 1987 میں کیا 32 سال بعد 2018 میں وہ اپنے نیک کام سے سرخرو ہوگئیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں