The news is by your side.

Advertisement

‘آرٹیکل 63 کی تشریح کے لیے صدارتی ریفرنس 21 مارچ تک دائر کیا جائے گا’

اسلام آباد : اٹارنی جنرل خالد جاوید خان کا کہنا ہے کہ آرٹیکل 63 کی تشریح کے لیے صدارتی ریفرنس پیر21 مارچ تک دائر کیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق آئین کے آرٹیکل 63 کی تشریح سے متعلق صدارتی ریفرنس دائر کرنے کے معاملے پر اٹارنی جنرل خالد جاوید خان نے اے آر وائی نیوز سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ آرٹیکل 63 کی تشریح کے لیے صدارتی ریفرنس پر کام شروع کر دیا ہے۔

اٹارنی جنرل کا کہنا تھا کہ صدارتی ریفرنس پیر21 مارچ تک دائر کر دیا جائےگا، سپریم کورٹ کی رائے کے بعد آرٹیکل 63 پر بحث ازخود ختم ہوجائے گی۔

خالد جاوید خان نے مزید کہا کہ تحریک عدم اعتماد میں حکومت آئین اور قانون سے باہر نہیں جائےگی، جو کچھ بھی ہوگا آئین کے اندر رہتے ہوئے ہوگا۔

اٹارنی جنرل کا کہنا تھا کہ منحرف ارکان کو 5 سال نااہل کرنے کا آرڈیننس تیار نہیں ہوا، 5 سال نااہلی کا اٹارنی جنرل آفس میں کوئی آرڈیننس نہیں بنا گیا ، آرٹیکل 186 کے تحت صدارتی ریفرنس پرعدالت سے رائے کا فیصلہ ہوا، وزارت قانون کو شاید کوئی غلط فہمی ہوئی ہے۔

یاد رہے گذشتہ روز حکومت نے آرٹیکل 63اے کی تشریح کیلئے سپریم کورٹ میں ریفرنس فائل کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

فوادچوہدری کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ سے رائے لی جائیگی پارٹی ممبرہارس ٹریڈنگ میں ملوث ہوتوووٹ کی کیاقانونی حیثیت ہوگی اور وفاداریاں تبدیل کرنے پر نااہلی زندگی بھرہوگی یا نہیں۔

وفاقی وزیر نے مزید کہا تھا کہ ریفرنس میں رائے لی جائے گی کہ کیا ایسے ممبران کودوبارہ انتخاب لڑنے کی اجازت ہو گی؟ اور سپریم کورٹ سے درخواست کی جائے گی کہ ریفرنس روزانہ سن کر فیصلہ کیا جائے

Comments

یہ بھی پڑھیں