The news is by your side.

Advertisement

فوم والے سینڈلز مقبول، قیمتیں آسمان پر جا پہنچیں

لندن : باورچی خانوں میں استعمال ہونے والے اسفنج سے برطانوی خواتین کے لیے تیار گیے گئے سینڈلز کی فروخت میں اضافہ ہوتے ہی قیمتوں میں اضافہ ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق مشہور فیشن ڈیزائنر کرسٹوفر کین کی جانب سے یورپی بالخصوص برطانوی خواتین کے لیے ایسے سینڈلز تیار کیے گئے ہیں جسے دیکھ کر باورچی خانے میں رکھے برتن صاف کرنے والے اسفنج کا گمان ہوتا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا تھا کہ فورم سے بنائی گئی سینڈلز کو لوگوں نے جھوٹ سمجھا تاہم کرسٹوفر کین کی جانب سے سینڈلز کی فروخت شروع ہونے کے بعد عوام اسے تیزی سے خریدنا شروع کیا اور مذکورہ سینڈلز کی فروخت میں اس قدر اضافہ ہوگیا کہ بسا اوقات کرسٹوفر کی ویب سائٹ پر بھی ’اسٹاک ختم‘ کے الفاظ تحریر ہوتے ہیں۔

یاد رہے کہ مذکورہ فیشن ڈیزائنر اس سے قبل بھی مختلف قسم کی عجیب و غریب سینڈلز فروخت کرچکی ہیں جس سے انہیں کافی منافع ہوا تھا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ ڈیزانر نے مذکورہ سینڈلز پر کو چمڑے سے تیار کیا ہے جس کی سجاوٹ کے لیے زرد اور آسمانی رنگ کے فوم استعمال کیے استعمال کیے ہیں جبکہ بعض سینڈلز میں آگے کی جانب ہیرے کی پٹی بھی لگائی گئی ہے۔


مزید پڑھیں : اپنے شہر کی خوشحالی کا اندازہ خواتین کی اونچی ہیل سے لگائیں


غیر ملکی میڈیا کے مطابق فوم والی سینڈلز کی قیمت 800 برطانوی پاؤنڈ کے قریب ہیں جو تقریباً 1 لاکھ پاکستانی روپے سے زائد کی رقم بنتی ہے۔

خیال رہے کہ فوم والی سینڈلز کی فروخت سنہ 2017 میں شروع کی گئی تھی جس کے بعد اسے آن لائن فروخت کیا جانے لگا تاہم اب ویب سائٹس کی جانب سے بھی اسٹاک ختم ہونے کا نوٹس لگا دیا گیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ فوم والی سینڈلز تیار کرنے والی فیشن ڈیزائنر کرسٹوفر کین کی بہن 2017 میں مذکورہ سینڈلز پہن کر 10 ڈاؤننگ اسٹریٹ پہنچی تھی جس کے بعد فوم والی سینڈلز کی فروخت میں تحاشا اضافہ ہوا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں