The news is by your side.

Advertisement

اقامہ ایک ویزا ہوتا ہے، ویزے پر تاحیات نا اہل کر دیا جاتا ہے: وزیر اعظم

سیالکوٹ: وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ اقامہ ایک ویزا ہوتا ہے اس پر نااہل کریں گے تو کیا یہ خدمت ہوگی۔ ویزے پر سیاست دانوں کو تاحیات نا اہل کر دیا جاتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی سیالکوٹ کے شہر پسرور پہنچے جہاں انہوں نے سیالکوٹ پسرور روڈ کے توسیعی منصوبے کا سنگ بنیاد رکھا۔

پسرور آمد کے موقع پر کیڈٹ کالج کے طلبہ نے وزیر اعظم کو گارڈ آف آنر بھی پیش کیا۔

وزیر اعظم نے سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سابق وزیر قانون زاہد حامد نے دن رات محنت کی اور معاملات کو حل کیا۔ ’ایک بل کا معاملہ آیا تھا اس کی رپورٹ میں نے پڑھی ہے‘۔

انہوں نے کہا کہ رپورٹ میں زاہد حامد کو کہیں قصور وار نہیں ٹھہرایا گیا۔ زاہد حامد نے مسئلہ حل کرنے کے لیے رضا کارانہ استعفیٰ دیا۔

وزیر اعظم نے کہا کہ سیالکوٹ ایسے لوگوں کو ایوان میں بھیجتا ہے جو خدمت کرتے ہیں۔ سیالکوٹ کے ارکان اسمبلی نے کبھی کسی کام سے انکار نہیں کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ سیاستدان کی عزت نہیں ہوگی تو ملک ترقی نہیں کر سکتا۔ خواجہ آصف، زاہد حامد اور دیگر سیاست دانوں کو سب جانتے ہیں۔ ’خواجہ آصف نے 30 سال عوام کی خدمت کی ہے‘۔

وزیر اعظم نے کہا کہ اقامہ ایک ویزا ہوتا ہے اس پر نااہل کریں گے تو کیا یہ خدمت ہوگی، سیاستدان ملک کے لیے محنت کرتے ہیں اور پیش ہوتے ہیں۔ ’ویزے پر سیاست دانوں کو تاحیات نا اہل کر دیا جاتا ہے‘۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ملکوں کی ترقی کا واحد ذریعہ ووٹ اور سیاستدانوں کو عزت دینا ہے۔ احتساب صرف سیاست دان کا ہوتا ہے، سیاست دان شیشے کے گھر میں رہتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن نے پورے ملک میں موٹر ویز اور ہائی ویز کا جال بچھایا۔ ’پاکستان میں کسی نے کام کیا ہے تو وہ مسلم لیگ ن ہے۔ کسی کے پاس مسائل کا حل تھا تو وہ نواز شریف ہیں، ملک میں کہیں بھی جائیں آپ کو ن لیگ کے منصوبے ملیں گے‘۔

وزیر اعظم کا مزید کہنا تھا کہ ہم نے نہیں کہا کہ 5 سال گزر گئے اور ہمیں 11 نکات یاد آ گئے۔ ’کیا سی پیک کا منصوبہ پہلے نہیں بنایا جا سکتا تھا۔ تمام منصوبے مسلم لیگ ن کے دور میں ہی شروع ہوئے۔ جی ڈی پی کی گروتھ 3 فیصد سے کم تھی آج 6 فیصد ہے‘۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کے عوام فیصلہ کرلیں تو اس کی عزت ہونی چاہیئے، ’جنہیں تقریروں میں باتیں یاد آتی ہیں ان سے کہنا چاہتا ہوں، آپ نے 5 سال حکومت کی، مسائل ہی حل کر لیتے‘۔

وزیر اعظم نے مزید کہا کہ ہماری سیاست کا محور عوام کی خدمت ہے۔ نواز شریف کا ایک اور وعدہ پورا کرنے کی خوشی ہے۔ ہر ہفتے سینکڑوں ارب روپے کے منصوبوں کا افتتاح کرتا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ ہمارا مقابلہ ان سے ہے جن کی اپنی کوئی کارکردگی نہیں۔ جو خود کچھ نہیں کر سکتے وہ الزام لگانا جانتے ہیں۔ موجودہ دور میں 65 سال کے برابر کام کیے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں