The news is by your side.

Advertisement

پی آئی اے سمیت نجی ائیرلائنز کا ایروناٹیکل چارجز میں مزید 2 سال کی چھوٹ کا مطالبہ

کراچی : کورونا کے باعث دنیا بھر کی طرح پاکستان کی ہوابازی صنعت بھی متاثر ہے ، پی آئی اے سمیت نجی ائیرلائنز نے ایروناٹیکل چارجز میں مزید 2 سال کی چھوٹ کا مطالبہ کردیا۔

تفصیلات کے مطابق اندرون ملک جانے والی پروازوں پر ائیر نیوی گیشن اور ایروناٹیکل چارجزز کی وصولی کے معاملے پر پی آئی اے سمیت تما م نجی ائیر لاین نے ایروناٹیکل چارجز مزید دوسال کی چھوٹ کا مطالبہ کر دیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ائیر لائنز نے مطالبہ کیا ہے کہ سی اے اے کی جانب سے دوسال تک ملکی ائیر لائینز سے ائیروناٹئکل سمیت دیگرچارجز وصول نہ کئے جائیں ، عالمی وبا کورونا وائرس کی وجہ سے دنیا بھر کی طرح پاکستان کی ہوا بازی کی صنعت بھی بری طرح متاثر ہوئی۔

سی اے اے نے یکم جون سے پروازوں پر لینڈنگ اور ٹیک آف سمیت ایئرپورٹس پر پارکنگ ، بورڈنگ چارجز،جہازوں کو پاور سپلائی اور ٹریمنل نیویگیشن چارجز  بھی وصول کرنا شروع کر دیئے جبکہ اندرون ملک سفر کرنے والے مسافروں سے امبارگیشن اور سیکیورٹی کی مد میں ٹیکس کی وصولی بھی شروع کردی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ کورونا کے باعث پی آئی اے سمیت تمام نجی ائیرلائنز کا بھی فضائی آپریشن متاثر ہوا ، کورونا کی ابتداء سے لیکر بڑے پیمانے پر فلائٹس آپریشن بھی معطل رہا ، جس کے باعث پی آئی اے سمیت تمام نجی ائیر لائینزز متاثر ہوئیں اور اربوں روپے نقصان سا منا رہا۔

ذرائع کے مطابق اس دوران تما م ائیر لائینزز کو مجموعی طور پر پندرہ سے 26 ارب روپے سے زائد کا نقصان کا سامنا رہا جبکہ پرائس وار کی وجہ سے پی آئی اے سمیت نجی ائیر لاین کو یومیہ ایک کرورڑ روپے سے زائد کا نقصان ہورہا ہے۔

ائیر لائینز یو میہ پچاس فیصد فیول کے اخراجات بھی پورے نہیں کر پارہی ہیں اور ایک اندازے کے مطابق ائیر بلیو کو ساڑھے سات ارب روپے سے زائد کا نقصان ہوا جبکہ سرین ائیر لائن کو چار ارب روپے سے زائد کا نقصان کا سامنا رہا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں