فیسو ں میں اضافے کی حد مقرر‘ معاملہ عدالت پہنچ گیا -
The news is by your side.

Advertisement

فیسو ں میں اضافے کی حد مقرر‘ معاملہ عدالت پہنچ گیا

لاہور: ہائی کورٹ نے پرائیوٹ سکولز کی فیسوں میں اضافے اور سکولوں کو جاری شوکاز نوٹسز کے خلاف اپیل پر پنجاب حکومت کو نوٹس جاری کردیئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس عابد عزیز شیخ کی سربراہی میں 3رکنی بنچ نے پرائیوٹ سکولز کی اپیل پر سماعت کی جس میں فیسوں میں اضافے پر پنجاب حکومت کے شوکاز نوٹسز کو چیلنج کیا گیا ہے۔

پرائیوٹ سکولز کے وکلا نے دلائل دیے کہ فیسوں میں اضافہ کی حد حکومت مقرر نہیں کر سکتی‘ لیکن اس کے باوجود پنجاب حکومت نے زیادہ سے زیادہ اضافے کی حد 8 فیصد مقرر کر دی جبکہ سکولز کے اخراجات پورے کرنے کیلئے فیس میں اضافہ کیا گیا ہے۔

 پنجاب حکومت اورپرائیوٹ اسکول فیڈریشن مدمقابل*

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ اساتذہ کی تنخواہوں، سکول عمارت کی دیکھ بھال اور سیکیورٹی کے انتظامات سمیت دیگر معلامات پر بھاری اخراجات اٹھتے ہیں ۔

پنجاب حکومت کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ حد اس لیے مقرر کی گئی ہے کہ سکولز نے پچھلے سال 30 فیصد تک اضافے کیے۔ طلبا کے وکیل نے بیان دیا کہ آئین میں تعلیم مفت دینے کا کہا گیا ہے‘ اس کو کاروبار نہیں بنایا جاسکتا لہذا اضافہ کالعدم قرار دیا جائے ۔

اس کیس کی سماعت کے بعد عدالت نے پنجاب حکومت کو نوٹس جاری کرتے تفصیلی رپورٹ طلب کر لی۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں