The news is by your side.

Advertisement

نجی یونیورسٹی کو کارڈیک اسٹنٹ مقامی سطح پر تیار کرنے کی اجازت مل گئی

اسلام آباد : امراض قلب کے مریضوں کےلیے بڑی خبر آگئی، پاکستان میں کارڈیک اسٹنٹ مقامی سطح پر تیار کرنے کیلئے نجی یونیورسٹی کو اجازت مل گئی ، ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا ہے کہ نسٹ یونیورسٹی عالمی معیار کا اسٹنٹ تیار کرے گی۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان میں کارڈیک اسٹنٹ مقامی سطح پر تیار کرنے کا منصوبہ کرلیا گیا ہے، ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی نےنجی یونیورسٹی کو اسٹنٹ تیاری کی اجازت دے دی ہے۔

ڈریپ کی جانب سےنسٹ یونیورسٹی کو اسٹنٹ سازی کا لائسنس جاری کردیا گیا ہے ، معاون خصوصی برائے صحت ظفر مرزا نے کہا ہے کہ نسٹ یونیورسٹی عالمی معیار کا اسٹنٹ تیار کرے گی، حکومت ڈریپ میں وسیع پیمانے پر اصلاحات یقینی بنا رہی ہے

ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا تھا کہ مقامی سطح پر تیاری سے اسٹنٹ کی قیمت میں نمایاں کمی آئے گی اور اسٹنٹ سازی کے مثبت اثرات مرتب ہوں گے۔

گذشتہ روز معاون خصوصی برائے صحت ظفر مرزا نے کہا تھا کہکوروناوائرس کیخلاف جنگ میں انفارمیشن بھی بہترین ہتھیار ہے، ہمیں عوام تک درست انفارمیشن دینی ہےتاکہ عوام باخبررہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اٹلی میں10فیصدسےزائدطبی عملہ کوروناوائرس کاشکارہوا ہے ، پاکستان میں اسی لیےطبی عملےپرزیادہ توجہ دی جارہی ہے، اسپتالوں میں آئسولیشن وارڈزبنانےکامقصددیگرمریض متاثرنہ کرنا ہے، روزانہ کی بنیادپرکوروناوائرس سےمتعلق ڈیٹااپ ڈیٹ کیاجائے گا۔

خیال رہے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا تھا کہ پاکستان میں دل کی بیماریاں تیزی سے پھیل رہی ہیں، امراض قلب کے سدباب کیلئے ٹھوس اقدامات کی ضرورت ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں