The news is by your side.

Advertisement

بلوچستان میں بجلی کی بچت کے بڑے منصوبے میں پیش رفت

کوئٹہ: صوبہ بلوچستان میں بجلی کی بچت کے بڑے منصوبے کے سلسلے میں زرعی ٹیوب ویلز شمسی توانائی پر منتقلی کے پروجیکٹ میں پیش رفت ہوئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق بلوچستان میں 10 ہزار زرعی ٹیوب ویلز کی شمسی توانائی پر منتقلی میں پیش رفت ہوئی ہے، پاور ڈویژن کے ترجمان کا کہنا تھا کہ ٹیوب ویلز کی شمسی توانائی پر منتقلی کے لیے پہلی مکمل فزیبلٹی رپورٹ تیار کر لی گئی ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق وفاقی وزیر اور سیکریٹری پاور نے متبادل توانائی ڈیولپمنٹ بورڈ میں فزیبلٹی رپورٹ کا جائزہ لیا، رپورٹ جرمن کمپنی اور نیسپاک نے مل کر تیار کی ہے، اس رپورٹ پر اسٹیک ہولڈرز اور تکنیکی ماہرین سے رائے لی جائے گی۔

فزیبلٹی رپورٹ میں سورج کی روشنی سے استفادے کے لیے اقدامات تجویز کیے گئے ہیں، ترجمان پاور ڈویژن کا کہنا تھا کہ شمسی توانائی پر منتقلی سے عوامی آگاہی کے لیے اقدامات بھی رپورٹ کا حصہ بنائے گئے ہیں۔

توانائی کے شعبے میں گردشی قرضوں کے بڑھنے کی رفتار میں کمی

ترجمان کے مطابق بلوچستان کے ہزاروں ٹیوب ویلز کو اربوں کی بجلی فراہم کی جاتی ہے، بر وقت ادائیگیاں نہ ہونے سے گردشی قرضے میں اضافہ ہوتا ہے، سولر ٹیوب ویلز سے بلوچستان میں زرعی انقلاب آ جائے گا، اور بجلی خسارے سے بھی بچا جا سکے گا۔

خیال رہے کہ پی ٹی آئی حکومت نے بلوچستان سے جو وعدے کیے تھے، ان میں سے ایک ٹیوب ویلز کو شمسی توانائی پر منتقل کرنے کا وعدہ بھی شامل تھا۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں