سعودی عالم دین شیخ احمد العماری دوران حراست انتقال کرگئے
The news is by your side.

Advertisement

سعودی عالم دین شیخ احمد العماری دوران حراست انتقال کرگئے

ریاض: سعودی عرب میں 69 سالہ عالم دین شیخ احمد العماری دوران حراست دار فانی سے کوچ کرگئے۔

بین الاقوامی خبرساں ادارے کے مطابق سعودی عرب کے ممتاز عالم دین، مبلغ اور مسجد نبوی کے سابق امام شیخ احمد العماری 69 برس کی عمر میں دوران حراست انتقال کرگئے۔

الجزیرہ کی رپورٹ کے مطابق ممتاز عالم دین شیخ احمد العماری دوران حراست تشدد کیا گیا موصولہ اطلاعات کے مطابق ان کے انتقال کے اسباب میں یہ وجہ بھی شامل تھی، شیخ احمد العماری قرآن کالج اسلامک یونیورسٹی آف مدینہ میں سابق ڈین تھے۔

سعودی عرب نے جمعہ کی نماز میں سرکاری خطبہ نہ دینے پر متعدد علماء کو حراست میں لیا تھا، شیخ احمد العماری کو بھی پانچ ماہ قبل گرفتار کیا گیا تھا۔

عرب میڈیا کے مطابق دوران حراست ان پر فالج کا حملہ ہوا تھا، مبینہ طور پر جیل کی خراب صورت حال اور تشدد ان کی موت کی وجہ بنی، 69 سالہ بیمار عالم دین کو صحت کی سہولیات میسر نہیں تھیں۔

لندن میں انسانی حقوق کی تنظیم کے ڈائریکٹر یحییٰ اسیری کا کہنا ہے کہ العماری کو گزشتہ سال اگست میں ان کے گھر سے حراست میں لیا گیا تھا، العماری کے قریبی دوست اور مسلم اسکالر صفر الحوالی کو بھی گرفتار کیا گیا تھا۔

شیخ الصفر الحوالی کو تین ہزار صفحات پر مشتمل ایک کتاب لکھنے پر حراست میں لیا گیا تھا، اس کتاب میں سعودی ولی عہد محمد بن سلمان پر قاتلانہ حملے اور شاہی خاندان کے اسرائیل کے ساتھ گٹھ جوڑ پر تفصیلی بحث کی گئی تھی۔

اسیری کے مطابق شیخ احمد العماری کو 2 جنوری کو طبیعت بگڑنے پر جدہ کے کنگ عبداللہ میڈیکل کمپلیکس میں داخل کرایا گیا تھا لیکن ممتاز عالم دین کی موت علاج معالجے میں غفلت برتنے پر ہوئی ہے۔

خیال رہے کہ سعودی ولی عہد اور شاہی خاندان کے ناقد کئی علماء زیر حراست ہیں اور ان کے سوشل میڈیا اکاؤنٹ بھی بند کرادئیے گئے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں