پاک بحریہ کے تین کموڈورزکی ریئر ایڈمرل کے عہدے پر ترقی pak-navy
The news is by your side.

Advertisement

پاک بحریہ کے تین کموڈورزکی ریئر ایڈمرل کے عہدے پر ترقی

اسلام آباد: پاک بحریہ کے کموڈورعمران احمد، کموڈور محمد شعیب اور کموڈور ذکاء الرحمن کو ریئر ایڈمرل کے عہدے پر ترقی دے دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق پاک بحریہ کے تین کموڈورز کو ان کی صلاحیت، مہارت اور سنیارٹی کی بنیاد پر ترقی دیتے ہوئے ریئرایڈمرل کے عہدے پر فائض کردیا گیا ہے اور اس کا باقاعدہ اعلامیہ بھی جاری کردیا گیا ہے

ریئر ایڈمرل کے عہدے پر ترقی پانے والے عمران احمد نے 1985 میں پاک بحریہ کی میرین انجینئرنگ برانچ میں کمیشن حاصل کیا اور نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی سے گریجویشن مکمل کی۔

قبل ازیں ریئر ایڈمرل عمران احمد بہ طور اسسٹنٹ چیف آف نیول اسٹاف ( مینٹیننس) اور منیجنگ ڈائریکٹر پاکستان نیوی ڈاکیارڈ فرائض انجام دیے رہے ہیں جب کہ فی الوقت پاکستان نیوی انجینئرنگ کالج پی این ایس جوہر کراچی کے کمانڈنٹ کی ذمہ داریاں سر انجام دے رہے تھے۔

ترقی پانے والے دوسرے ریئر ایڈمرل محمد شیب نے 1988میں پاک بحریہ کی آپریشنز برانچ میں کمیشن حاصل کیا اور نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی اسلا م آباد اور امریکہ کے نیول وار کالج سے گریجویشن کے بعد بہ طور کمبائنڈ ٹاسک فورس151- 9 ویں آگزلری اینڈ مائن وارفیئر اسکواڈرن،10 ویں پیٹرول کرافٹ اسکواڈرن اور پاک بحریہ کے جہاز نصر کی کمانڈ کرچکے ہیں۔

ستارہ امتیاز (ملٹری) کے حامل ریئر ایڈمرل محمد شعیب کی امتیازی تقرریوں میں آرمڈ فورسز وارکالج نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی اسلام آباد کے ڈائریکٹنگ اسٹاف،نیول ہیڈ کوارٹر زمیں ڈائریکٹر نیول ٹریننگ اور پی این ایس اکرم کے کمانڈنگ آفیسر کی تقرریاں شامل ہیں۔اس وقت آپ نیول ہیڈکوارٹرز میں اسسٹنٹ چیف آف نیول اسٹاف ( اسپیشل آپریشنز فورسزاینڈ میرینز) کی خدمات سر انجام دے رہے تھے۔

ترقی پانے والے تیسرے ریئر ایڈمرل ذکاءالرحمن نے 1988میں پاک بحریہ کی آپریشنز برانچ میں کمیشن حاصل کر کے نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی اسلام آباد سے گریجویشن کی اور بعد ازاں فرانس سے آرمز آف سب میرین کورس سے تربیتی کورسز بھی کیئے۔

ریئرایڈمرل ذکاء اللہ 25 ویں ڈسٹرائراسکواڈرن، پاکستان نیوی کے جہازبدر اور پاکستان نیوی کی میزائل بوٹ قوت کی کمانڈ کر چکے ہیں جب کہ دیگر امتیازی تقرریوں میںڈائریکٹر نیول انٹیلی جنس (آپریشنز)،ڈائریکٹرالیکٹرانک وارفیئر اور اسسٹنٹ نیول سیکرٹری کی تقرریاں شامل ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں