The news is by your side.

Advertisement

روس کی کرونا ویکسین کے خلاف ’’ گھناؤنا کھیل ‘‘ کھیلے جانے کا انکشاف

ویانا: آسٹریا میں تعینات روسی سفیر نے دعویٰ کیا ہے کہ روس کی تیار کردہ ویکسین کے خلاف ’گھناؤنا کھیل‘ کھیلا جارہا ہے۔

روسی میڈیا رپورٹ کے مطابق آسٹریا میں تعینات روسی سفیر دمتری لیوبنسکی  نے نجی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ روس کی تیار کردہ مؤثر کرونا ویکسین اسپوتنک V کے خلاف پروپیگنڈے کیے جارہے ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ آسٹریا نے روس سے اسپوتنک فائیو  برآمد کرنے کی بات چیت شروع کی مگر پروپیگنڈے کا سُن کر فیصلے سے پیچھے ہٹ گیا۔

دمتری کا کہنا تھا کہ ’یورپ کو روسی ویکسین کی فراہمی کے خلاف منظم طریقے سے گھناؤنا کھیل کھیلا جارہا ہے‘۔

مزید پڑھیں: کیا روسی ویکسینز شوگر اور دل کی بیماریوں والے افراد کے لیے موزوں ہیں؟

یہ بھی پڑھیں: روسی ویکسین سپوتنک موٗثر ہے یا آسٹرازینیکا؟ تحقیق میں بڑا انکشاف

انہوں نے کہا کہ ہم آسٹریا کی مدد کے لئے تیار ہیں لیکن ہماری ویکسین کی یورپ کو فراہمی میں روکاوٹ ڈالنے کی غرض سے گھناؤنا کھیل کھیلا جارہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ’اس کھیل سے دوا ساز کمپنیوں اور اداروں کو اربوں ڈالرز کے نقصان کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے‘۔

روسی سفارت کار کے مطابق اگر آسٹریا اگلے ہفتے معاہدے پر دستخط کرتا ہے تو وہ اپریل کے آخر تک روسی ویکسین کا پہلی کھیپ وصول کر سکے گا۔  انہوں نے کہا جون کے آخر تک آسٹریا کو روسی ویکسین کی دس لاکھ خوراکیں مل سکتی ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں