فرانس میں حکومت کے خلاف احتجاج بدستور جاری، تاریخی مقامات بند رہیں گے
The news is by your side.

Advertisement

فرانس میں حکومت کے خلاف احتجاج بدستور جاری، تاریخی مقامات بند

پیرس: فرانس میں حکومت مخالف احتجاج بدستور جاری ہے، جس کے باعث ایفل ٹاور سمیت دیگر تاریخی مقامات آج بھی بند رہیں گے۔

تفصیلات کے مطابق مظاہرین نے آج شاہراہ شانزے لیزے پر احتجاج کی کال دے رکھی ہے، جس کے باعث حکومت نے قانون نافذ کرنے والے اداروں کو متحرک کردیا ہے۔

انتظامیہ کا کہنا ہے کہ مظاہرین سے نمٹنے کے لیے پولیس متحرک ہے، حالات کو کنٹرول میں رکھنے کے لیے ہزاروں اہلکار تعینات ہوں گے۔

حکام نے شاہراہ شانزے لیزے پر واقع دکانیں اور مارکیٹیں بند کرا دیں جبکہ ایفل ٹاور اور دیگر تاریخی مقامات پہلے سے ہی بند کیے جاچکے ہیں۔

علاوہ ازیں فرانسیسی حکام نےحالیہ احتجاج سے متعلق کہا ہے کہ حکومت مخالف مظاہرے اب عفریت بن چکے ہیں، جس کے باعث نظام زندگی درہم برہم ہے۔

عوامی احتجاج ’عفریت‘ بن گیا ہے، فرانسیسی حکومت

خیال رہے کہ گذشتہ دنوں فرانسیسی حکومت نے مہنگائی پر شدید احتجاج کرنے والے مظاہرین کے سامنے گھٹنے ٹیکتے ہوئے پیٹرولیم مصنوعات پر ٹیکس 6 ماہ کے لیے معطل کرنے کا اعلان کیا تھا۔

بعد ازاں احتجاجی مظاہرین نے وزیرِ اعظم ایمانوئیل میکرون کی پیشکش کو مسترد کرتے ہوئے کہا تھا کہ حکومت جب تک مطالبات حتمی طور پر نہیں مانتی احتجاج جاری رہے گا۔

واضح رہے کہ پیرس سمیت فرانس کے مختلف شہروں میں پیٹرول پر اضافی ٹیکس اور مہنگائی کے خلاف احتجاج جاری ہے، جس پر حکومت کو فیول پر عائد اضافی ٹیکس واپس لینے کا فیصلہ کرنا پڑا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں