The news is by your side.

Advertisement

عراق: احتجاج شدت اختیار کر گیا، مظاہرین اور پولیس میں تصادم، 100 سے زاید افراد ہلاک

بعداد: حکومت مخالفین احتجاج شدت اختیار کر گیا، جس سے خانہ جنگی کا خطرہ پیدا ہوگیا.

تفصیلات کے مطابق مہنگائی اور حکومتی پالیسیوں کے خلاف شروع ہونے والے مظاہروں نے پرتشدد شکل اختیار کر لی.

کئی روز سے نافذ کرفیو آج ہفتے کے روز جزوی طور پر اٹھا دیا گیا، البتہ شاہراہوں تک رسائی تاحال محدود ہے

مظاہرین اور  سیکیورٹی اہل کاروں کے درمیان ہونے  والے تصادم میں سو سے زاید افراد کی ہلاکتوں کی اطلاع ہے، زخمیوں کی تعداد سیکڑوں‌ میں‌ ہے.

عراقی پارلیمنٹ کے انسانی حقوق کمیشن نے مظاہروں کے دوران ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد 93 بتائی ہیں۔

کمیشن کے مطابق زخمیوں کی تعداد چار ہزار کے قریب ہے.

کئی روز سے نافذ کرفیو آج ہفتے کے دن جزوی طور پر اٹھا دیا گیا، البتہ شاہراہوں تک رسائی تاحال محدود ہے۔

مزید پڑھیں: عراق میں ہونے والے پر تشدد مظاہروں کے پس پردہ اسرائیل ہے، ایران کا الزام

دوسری جانب بڑے شہروں‌ میں انٹرنیٹ سروس معطل ہے، داخلی اور خارجی حصوں‌ پر سخت سیکیورٹی ہے.

خیال کیا جارہا ہے کہ اطلاعات تک رسائی نہ ہونے کے باعث ہلاکتوں کی صحیح تعداد کا اندازہ لگانا مشکل ہے.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں