The news is by your side.

Advertisement

آرٹیکل 370 کی منسوخی، یورپ میں بھارت کے خلاف احتجاج کی تیاریاں

برسلز: بھارت کی جانب مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے پر یورپ میں احتجاجی کیمپوں کے انعقاد کی تیاریاں شروع ہوگئیں۔

تفصیلات کے مطابق کشمیرکونسل یورپ بھارت کی طرف سے جموں و کشمیر کی جداگانہ حیثیت ختم کرکے اس کو بھارت میں شامل کرنے کے نئی دہلی کے غاصبانہ اقدام اور مقبوضہ کشمیر میں بڑھتے ہوئے بھارتی مظالم کے خلاف برسلز میں مختلف مقامات پر تین دن تک احتجاجی کیمپوں کا انعقاد کررہی ہے۔

چیئرمین کشمیرکونسل یورپ علی رضا سید نے اس سلسلے میں برسلز میں جاری ایک بیان میں کہا کہ یہ کیمپ ”پلس ڈی ایل البرٹینے“، ”پلس شومان“ اور ”پلس ڈی ایل یورپ“ کے مقام پر لگائے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر کی جداگانہ حیثیت ختم کرنے کے بھارتی اقدام کے خلاف ہم بھرپور آواز اٹھائیں گے، جموں و کشمیر کے بارے میں بھارتی آئین کی دفعہ 370 اور35A کو ختم کرنے کے لیے صدارتی حکم کا اجراء اقوام متحدہ کی قراردادوں کے منافی ہے جن میں جموں و کشمیر کو ایک متنازعہ علاقہ قرار دیا گیا ہے۔

پاکستان نے بھارتی ہائی کمشنر اجے بساریہ کو ملک چھوڑنے کا حکم دے دیا

علی رضاسید نے اس اقدام کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس کے خطرناک نتائج برآمد ہوں گے، ریاست جموں و کشمیر ہرگز بھارت کا حصہ نہیں بلکہ بھارت نے کشمیریوں کو ان کا حق خودارادیت دینے کا وعدہ کیا ہوا ہے جس کے تحت کشمیری اپنے سیاسی مستقبل کا خود فیصلہ کرنے کے مجاز ہیں۔

چیئرمین کشمیرکونسل نے عالمی طاقتوں بشمول امریکا، یورپی یونین اور انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں سے مطالبہ کیا کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں مظالم بند کروائیں اور کشمیریوں کو ان کا حق خودارادیت دلانے کے لیے اپنا کردار ادا کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں