The news is by your side.

Advertisement

مظاہرین کا لاہور جنرل اسپتال کی ایمرجنسی کے گیٹ پر دھاوا

لاہور: لاہور میں سیاسی مذہبی جماعت کے مشتعل کارکنان نے لاہور جنرل اسپتال پر دھاوا بول دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق گذشتہ دو روز سے احتجاج کرنے والے سیاسی ومذہبی جماعت کے کارکنان کی جانب سے پر تشدد کارروائیاں جاری ہے، مشتعل کارکنان اور پنجاب پولیس کے درمیان کیشدگی کے باعث اب تک اسی سے زائد پولیس اہلکار و افسران زخمی ہوچکے جبکہ ایک اہلکار جاں بحق بھی ہوچکا ہے۔

سیاسی ومذہبی جماعت کےکارکنان نے آج لاہور جنرل اسپتال کے گیٹ پر دھاوا بول اور گیٹ توڑ ڈالا، جس کے باعث اسپتال میں شدید خوف وہراس پھیل گیا۔

اس موقع پر اسپتال میں تعینات پولیس اہلکاروں نے مشتعل کارکنان کو روکنے کی کوشش تو انہوں نے پولیس پر بھی پتھراؤ کیا، مشتعل مظاہرین کی کثیر تعداد کے باعث پولیس اور اسپتال سیکیورٹی گارڈز بھی حملہ آور بے بس نظر آئے۔

دوسری جانب مذہبی جماعت کے کارکنوں نے کینال روڈ پر ٹریفک کو زبردستی روکنے کی کوشش کی، اس موقع پر افسوسناک مناظر بھی دیکھنے کو ملے، ڈنڈا بردار کارکنان نے گاڑیاں نہ روکنے والوں پر پتھراؤ کیا اور متعدد گاڑیوں کے ٹائر پنکچر کردئیے، مذہبی جماعت کےکارکنان گاڑیاں پنکچر ،پتھراؤ کےبعدگلیوں میں چھپ گئے ہیں۔

پنکچر گاڑیاں سڑک کے درمیان کھڑی ہونے پر شہریوں کو آمدروفت میں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے، اور روزے میں شہری کینال روڈ پر اہل خانہ کے ساتھ بے یارو مددگار کھڑے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں