The news is by your side.

Advertisement

امریکہ بھرمیں ڈونلڈ ٹرمپ کی امیگریشن پالیسی کے خلاف احتجاجی مظاہرے

واشنگٹن : امریکہ بھر میں صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی غیرقانونی تارکین وطن کے خلاف سخت پالیسی کے خلاف احتجاجی مظاہوں میں ہزاروں افراد نے شرکت کی۔

تفصیلات کے مطابق امریکی دارالحکومت واشنگٹن ڈی سی، نیویارک، لاس اینجلس اور سان فرانسسکو سمیت متعدد شہروں میں صدرٹرمپ کی امیگریشن پالیسی کے خلاف احتجاجی مظاہرے کیے گئے۔

مظاہرین نے ٹرمپ انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ خاندانوں کو ایک دوسرے سے الگ نہ کیا جائے اور متنازع امیگریشن ایجنسی آئیس کو ختم کیا جائے۔

امریکی صدر کی امیگریشن پالیسی کے خلاف احتجاج کرنے والے مظاہرین کا کہنا تھا کہ یہ پالیسی امریکی عقائد کے خلاف ہے۔

ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے متنازع پالیسی کو ختم کرنے کے ایگزیکٹو حکم نامے کے باوجود اب بھی تقریباََ 2 ہزار بچے اپنے والدین سے الگ ہیں۔

امریکی پالیسی کے خلاف احتجاج‘ چھ سو سے زائد مظاہرین گرفتار

خیال رہے کہ گزشتہ روز امریکہ کی جانب سے تارکین وطن سے متعلق بنائی گئی پالیسی کے خلاف احتجاج کرنے والے چھ سو سے زائد مظاہرین کو گرفتارکیا گیا تھا۔

انسانی حقوق اورتارکین وطن کے حقوق کے لیے سرگرم تنظیموں کی جانب سے امریکہ کی 17 ریاستوں میں تارکین وطن کو بچوں سے علیحدہ کرنے کے قانون کو عدالتوں میں چلینج کیا گیا ہے۔

تارکین وطن کو قانونی کارروائی کے بغیر ملک بدر کردیا جائے گا، ڈونلڈ ٹرمپ

واضح رہے کہ گزشتہ ہفتےامریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ امریکا میں داخل ہونے والے غیر قانونی تارکین وطن کو بغیر کسی عدالتی کارروائی کے فوری طور پر ملک بدر کردیا جائے گا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں