The news is by your side.

Advertisement

اقوام متحدہ، ہیوسٹن، گلاسگو میں مودی کے خلاف مظاہرے

نیویارک: اقوام متحدہ ہیڈ کوارٹرز کے سامنے عیسائی کمیونٹی نے بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے خلاف مظاہرہ کیا، جس میں اقلیتوں کے نمایندوں نے مودی کی ہندو انتہا پسند پالیسیوں کے خلاف احتجاج کیا۔

تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیر میں نریندر مودی کی ظالمانہ پالیسیوں کے خلاف اقوام متحدہ، ہیوسٹن اور گلاسگو میں سیکڑوں مظاہرین سڑکوں پر نکل آئے۔

مظاہرین کا کہنا تھا کہ مسلمانوں، سکھوں، کرسچنز اور نچلی ذات والے ہندؤوں پر تشدد کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے، مودی ایک ہندو انتہا پسند ہے اور گجرات میں مسلمانوں کا قاتل ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ مودی کے بر سر اقتدار آنے کے بعد اقلیتوں کے ساتھ مظالم میں اضافہ ہوا ہے، ایسے شخص کا اقوام متحدہ میں جانا ایک سوالیہ نشان ہے۔

مزید تازہ خبریں:  نیویارک، مودی کے خلاف مظاہرے، عوام کی بڑی تعداد جمع ہونے کا امکان، ایڈوائزری جاری

ادھر ریاست ٹیکساس میں ہیوسٹن کی فضا بھی گو مودی گو کے نعروں سے گونج اٹھی، ہیوسٹن میں بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے خطاب کے خلاف احتجاج کیا گیا، جس میں پاکستانی سمیت کشمیری اور سکھ کمیونٹی بھی شریک ہوئی۔

ٹیکساس کے مختلف شہروں سے لوگوں کی بڑی تعداد مظاہرے میں شریک ہوئی، مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانیت سوز مظالم کا نوٹس لیا جائے۔

گلاسگو میں بھی کشمیریوں سے اظہار یک جہتی کے لیے احتجاجی ریلی نکالی گئی، ریلی کا اہتمام جارج اسکوارم میں اسکاٹش ہیومن رائٹس فورم نے کیا، ریلی میں برطانوی ممبر پارلیمنٹ، ممبر آف اسکاٹش پارلیمنٹ نے شرکت کی۔

شرکا نے مطالبہ کیا کہ اقوام متحدہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالی پر خاموشی کو توڑے، اور کشمیریوں کو ان کا حق خود ارادیت دلوائیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں