بیرون ملک لاعلاج مریض پاکستان میں صحتیاب -
The news is by your side.

Advertisement

بیرون ملک لاعلاج مریض پاکستان میں صحتیاب

برطانیہ میں سورائسز سے متاثرہ ایک شخص کو علاج کے لیے ڈاکٹرز کی جانب سے انکار کے بعد پاکستان میں علاج مل گیا۔

یہ پاکستانی شخص برطانیہ میں رہائش پذیر تھا جب اچانک وہ اس مرض کا شکار ہوا۔ الرجی، جلد کے پھٹنے اور سرخ ہونے کا مرض اس پر حملہ آور ہوا اور آہستہ آہستہ پورے جسم پر پھیل گیا۔

متاثرہ شخص کے لیے معمولی حرکت کرنا اور روز مرہ کے کام انجام دینا بھی مشکل ہوگیا۔

برطانوی ڈاکٹرز نے اس صورتحال کو عام سمجھ کر معمولی دوائیاں دیں اور اسے ایمرجنسی ماننے سے انکار کردیا تاہم جس طرح یہ مرض پھیل رہا تھا اس سے مریض کے جان جانے کا خدشہ لاحق تھا۔

ایسے میں مریض کا پاکستان میں موجود اپنے رشتے داروں کے توسط سے مرہم سے رابطہ ہوا جہاں موجود ڈاکٹرز نے علاج کے لیے فوری طور پر انہیں پاکستان آنے کا کہا۔

مرہم ایک موبائل ایپ ہے جو پاکستان میں مختلف امراض کا شکار افراد کی ڈاکٹرز تک رسائی کے لیے کوشاں ہے۔

سورائسز سے متاثرہ شخص جس دن پاکستان پہنچا اسی دن مرہم کے توسط سے بہترین ماہرین جلد نے اس کا معائنہ کیا اور اسی دن سے علاج کا آغاز کردیا گیا۔

ایک ماہ کے اندر اندر سورائسز کا مرض قابو میں آگیا اور بتدریج خاتمے کی طرف بڑھنے لگا۔

مریض کے مطابق برطانیہ میں دنیا کی بہترین طبی سہولیات ہونے کے باوجود وہ ان سے محروم رہا، اور ایسے وقت میں پاکستانی ڈاکٹرز ہی اس کے کام آئے جن کا وہ بے حد شکر گزار ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں