The news is by your side.

Advertisement

ایم کیو ایم رابطہ کمیٹی کے تین سابق رکن پاک سرزمین میں شامل

کراچی: پاک سرزمین پارٹی کے سربراہ مصطفیٰ کمال نے ایم کیو ایم سے تعلق رکھنے والے تین رہنماؤں کی اپنی جماعت میں شمولیت کا اعلان کردیا، ان میں ایم کیو ایم رابطہ کمیٹی کے تین سابق اراکین سلیم تاجک ‘ نیک محمد اور شاکر علی شامل ہیں۔

۔

کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے مصطفیٰ کمال نے ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ فاروق ستار کو مخاطب کرکے کہا کہ برے لوگوں کی فہرست دیں دے، ایک کو بھی اپنی جماعت میں نہیں لوں گا۔

انہوں نے کہا کہ میرے الفاظ یاد رکھیں کہ امن قائم کرنا فوج اور پیرا ملٹری فورسز کا کام نہیں ہے بلکہ جگہ پیدا کرنا ہے، قیام امن ان سیاسی قوتوں کا کام ہے جو کہ عوام کے ذہن تک رسائی رکھتے ہیں اور یہی کام کراچی میں پاک سرزمین پارٹی کررہی ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ پاکستان کی فوج اور پیرا ملٹری فورس کو چاہئے کہ پاک سرزمین پارٹی کی کاوش کو سراہے کہ جب شہر میں اسلحے کی بھرمار تھی ہم نے اس وقت کراچی کے نوجوان کو ہتھیار پھینک کر کتاب اور کمپیوٹر کی جانب آنے کی دعوت دی تھی۔

مصطفیٰ کمال نے ڈی جی رینجرز کو مخاطب کرکے کہا کہ اگر وہ چاہتے ہیں کہ شہر میں ان کی رخصت کے بعد بھی امن قائم کرے اور اس کے لیے سیاسی سافٹ ویئر ضروری ہے اس کے بغیر امن کا قیام ممکن نہیں ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ برے کو برا ہی کہا جاتا ہے‘ کیا میں یہ کہوں کہ ایم کیو ایم کے قائد اورنج جوس پی کر فیصلے کرتے ہیں۔

سوشل میڈیا پر ایک بحث جاری ہے کہ ایم کیو ایم پاکستان اور پی ایس پی مل کیوں نہیں جاتیں‘ اس حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت کا وزیراعلیٰ ایم کیو ایم پاکستان کا مقدمہ لڑرہے ہیں اور دوسری جانب اسی ایم کیو ایم کے منتخب ڈپٹی میئر کو وزیراعلیٰ کا ایک عام سا افسر سوک سینٹر میں داخل نہیں ہونے دیتا۔

مصطفیٰ کمال کے مطابق پیپلز پارٹی کو یہی ایم کیو ایم درست لگتی ہے جو کہ عوامی مسائل پر ان کے ساتھ بات نہ کرسکتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں