site
stats
اہم ترین

کراچی کے لوگوں کو حقوق دلا کر رہوں گا، عمران خان

کراچی : پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ میں کراچی کے لوگوں کے ساتھ ان کے حقوق دلانے کیلئے نکلا ہوں، شہر قائد کے لوگوں کو پانی نہیں ملتا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی میں ایک بہت بڑی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کیا، عمران خان نے کہا کہ اللہ تعالیٰ نے ظلم اور ناانصافی کے خلاف جہاد کیلئے کیوں کہا ہے۔

جس معاشرے میں ظلم اور ناانصافی ہوتی ہے وہ اپنی آوازبلند کرتاہے، جومعاشرہ ظلم کے سامنے سرجھکا لیتا ہے وہ غلام بن جاتا ہے، کراچی وہ شہر ہے جہاں سب سے پہلے سیاسی تحریکیں چلتی تھیں۔

روشنیوں کا شہر آج گندگی میں ڈوب رہا ہے


چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ کراچی گندگی میں ڈوب رہا ہے اتنی گندگی پہلے کبھی نہیں دیکھی، ٹارگٹ کلنگ اور بھتہ خوری ہورہی ہے، جتنی گرمی ہوتی ہے اتنی زیادہ لوڈشیڈنگ کی جاتی ہے، یہاں کے لوگوں کو صاف پانی تک نہیں ملتا۔

کراچی کو روشنیوں کا شہر کہاجاتا تھا، یہ وہ شہر تھا جہاں رات تین بجے بھی رونق ہوتی تھی اور امن و امان اتنا تھا کہ کسی کو اپنے جان ومال کی فکر نہیں ہوتی تھی، انہوں نے کہا کہ میں نے آپ سے وعدہ کیا تھا جب بھی موقع ملا کراچی آؤں گا، کراچی کے لوگوں سے مل کر زور لگائیں گے تاکہ اس کوحقوق دیئے جائیں۔

ان کا کہنا تھا کہ کراچی میں ٹارگٹ کلنگ اور بھتہ خوری ہورہی ہے، کراچی کے شہریوں بھتہ مافیا، ٹینکرمافیا کے خلاف آپ سڑکوں پر کیوں نہیں نکلے؟ آپ وعدہ کریں کبھی ظلم اور ناانصافی کو تسلیم نہیں کریں گے، عوام ظلم کے سامنے چپ کرکے بیٹھے جائے تووہ اپنے اوپرمزیدظلم کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اب بھی مسائل حل نہ ہوئے تو پھر سڑکوں پرنکلیں گے اور پھر ایسے نہیں نکلیں گے جیسے ہم آج نکلے ہیں۔

بااختیاربلدیاتی نظام ہی کراچی کے مسائل کا حل ہے

عمران خان نے کہا کہ بااختیار بلدیاتی نظام آنے تک کراچی کے مسائل حل نہیں ہوسکتے، کے پی کے میں صحیح معنوں میں بلدیاتی اختیارات نچلی سطح پر ہیں، میئرکراچی بھی کہتا ہے کہ ہمیں کے پی کے والا بلدیاتی نظام چاہئیے۔

خیبر پختونخوا والوں سے پوچھیں پولیس کا نظام ٹھیک ہوا یا نہیں، پولیس کوسیاسی اورانتقامی کارروائیوں کے لئے استعمال کیا جاتا ہے، پولیس سے ایک غلط کام کرائیں پانچ وہ اپنے کرلیتے ہیں، آئی جی سندھ کہتا ہے کے پی کے والے اختیارات چاہئیں۔

ایان علی جیسے لوگ پاکستان کا پیسہ باہر لے کر جارہے ہیں

انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی اور ن لیگ چھ چھ باریاں لے چکے ہیں، سب سے بڑا مسئلہ کرپشن ہے، جوپیسہ کراچی اور سندھ میں خرچ ہونا ہے وہ دبئی جارہا ہے۔

ایان علی جیسے کئی لوگ پیسے باہر لے جارہے ہیں، جو شہر پاکستان کا پیرس ہونا چاہئے وہاں کے حالات دیکھیں، پاکستان کا پیسہ چوری کرکے ملک سے باہر لے جایاجاتا ہے۔

میں ایک بڑے گاڈ فادر کا مقابلہ کررہا ہوں


چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے نواز شریف پر تنقید کے نشتر چلاتے ہوئے کہا کہ آپ جانتے ہیں میں ایک بڑے گاڈ فادر کا مقابلہ کررہا ہوں، اس گاڈ فاردر کوسپریم کورٹ کے جج نے کہا ہے وہ پاکستان کا بڑا مافیا ہے، اب اُس گاڈ فادر کو عدالت نے جے آئی ٹی کے حوالے کردیا ہے۔

کراچی حقوق ریلی میں کارکنان و عوام کی بڑی تعداد میں شرکت


 قبل ازیں  تحریک انصاف کی جانب سے کراچی حقوق ریلی مقررہ راستوں پر سے ہوتی ہوئی عمران خان کی قیادت میں جلسہ گاہ پہنچی۔

حقوق کراچی مارچ‘ کی قیادت عمران خان نے کی اور کارکنان کی بڑی تعداد بھی اس میں شریک تھی، پی ٹی آئی کی جانب سے شہر کے مختلف علاقوں میں خصوصی کیمپ لگائے گئےجہاں گزشتہ کئی روز سے پی ٹی آئی کے پارٹی نغمے اور عمران خان کی تقاریر کے حصے سنائے جاتے رہے۔

کلفٹن سے ریلی کا آغاز ہوا اور یہ شاہراہ فیصل سے کارسازاور  یونیورسٹٰی روڈ سے ہوتی ہوئی جیل روڈ اور پھر مزار قائد پہنچی، عمران خان سمیت پی ٹی آئی کی مرکزی قیادت تبدیلی بس میں سوار تھی۔

خیال رہےکہ گزشتہ شب تحریک انصاف کے مرکزی رہنما اسد عمرکاشمع سینٹر شاہ فیصل کالونی میں لگائے گئے کیمپ پر کارکنان اورمیڈیا نمائندوں سے باتیں کرتے ہوئےکہناتھاکہ ن لیگ اور پی پی کی مک مکا کی سیاست نے شہریوں سے ان کے بنیادی حقوق بھی چھین لیے ہیں۔

اس سے قبل گزشتہ روز پی ٹی آئی کےجنرل سیکریٹری عمران اسماعیل کاکہناتھاکہ گزشتہ 30 سالوں سے کراچی کی نمائندہ جماعت ہونے کا دعویٰ کرنے والی ایم کیوایم نے متعدد بار حکومت کا حصہ رہنے کے باوجود کراچی کے شہریوں کے مسائل کے حل کے لیے آواز نہیں اٹھائی۔


عمران خان کی کراچی کےعوام کو مارچ میں بھرپورشرکت کی دعوت


یاد رہےکہ گزشتہ روز عمران خان نے اپنے فیس بک پیچ پر ویڈیو پیغام میں کراچی کے لوگوں کو مارچ میں بھرپور شرکت کی دعوت دی تھی۔

واضح رہےکہ تحریک انصاف کےسربراہ کا کہناتھاکہ اتوار کی سہ پہر 3بجے مزار قائد سے جیل چورنگی تک واک کریں گے،ہماری یہ واک کامقصد کراچی کےمسائل اجاگر کرنا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top