معاملہ گول گول گھوم رہا ہے، جب تک نوازشریف وزیراعظم ہیں معاملے کی تحقیقات نہیں ہوسکتی، عمران خان -
The news is by your side.

Advertisement

معاملہ گول گول گھوم رہا ہے، جب تک نوازشریف وزیراعظم ہیں معاملے کی تحقیقات نہیں ہوسکتی، عمران خان

اسلام آباد : پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا کہ معاملہ گول گول گھوم رہا ہے، سلیم اللہ ،کلیم اللہ چل رہا ہے، شریف خاندان اب تک کوئی منی ٹریل پیش نہیں کرسکا،جب تک نوازشریف وزیراعظم ہیں معاملے کی تحقیقات نہیں ہوسکتی۔

تفصیلات کے مطابق پاناما کیس کی سماعت ملتوی ہونے کے بعد سپریم کورٹ کے باہر پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ تمام ادارے نوازشریف کو بچارہے ہیں، ایف بی آر کاغذات تیارکررہا ہے، جب تک نوازشریف وزیراعظم ہیں معاملے کی تحقیقات نہیں ہوسکتی۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ وکیل سلمان اکرم راجہ نے کہا ہے ہمارے پاس کوئی دستاویز نہیں ہے، ن لیگ کے وزرا نے کہا جائیداد90کی دہائی میں خریدی گئی، قطری خط سے پتہ چلتا ہے کہانی کچھ اور ہی ہے، اب پتہ چل رہا ہے قطری نے سیٹلمنٹ کے نتیجے میں فلیٹس دیئے۔

پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ نے کہا کہ نو ماہ سے کسی طرح کا ثبوت پیش نہیں کیا جارہا ہے، پاکستان میں جو دستاویزات تیار ہوسکتے ہیں وہ دیئے جارہے ہیں، باہر کی کمپنیوں میں تیار نہیں ہوسکتے تو وہ نہیں آرہے ہیں۔

انکا مزید کہنا تھا کہ میں نے جائیداد کب، کیسے خریدی، سب منی ٹریل موجود ہے، یہ لوگ 2006کے دستاویزات بھی جمع نہیں کراسکتے ہیں، دستاویزات سے ثابت ہورہا ہے مریم نوازبینیفشل اونر ہیں، مریم کے پاس تو فلیٹس خریدنے کے لئے پیسہ نہیں تھا، اس کامطلب ہے مریم نے نوازشریف کے پیسے سے فلیٹس خریدے۔

پی ٹی آئی چیئرمین نے کہا کہ معاملہ گول گول گھوم رہا ہے، سلیم اللہ ،کلیم اللہ چل رہا ہے، شریف خاندان اب تک کوئی منی ٹریل پیش نہیں کرسکا ہے، اصل منی ٹریل اسحاق ڈار کا اعترافی بیان ہے، پیسہ کس طرح منی لانڈرنگ کرکے بھیجا گیا،بی بی سی کی رپورٹ موجود ہے۔

عمران خان وکیل نے کہا یہ بادشاہ ہیں اور بادشاہوں کے بادشاہوں سے تعلقات ہوتے ہیں، حسین نواز کے لئے تین فلیٹس مے فیئرز میں خریدے گئے، جب چھوٹا بھائی گیا تو شریف خاندان کے فلیٹس کی تعداد4ہوگئی۔

انکا مزید کہنا تھا کہ عدالت نے پوچھا شریف خاندان نے تحفوں کے جواب میں کیا دیا تو وکیل نے بتایا کہ یہ لوگ بزنس پارٹنرز ہیں۔ حکومت پانامامیں پھنسی ہوئی ہے، سب کرپشن بچانے میں لگے ہیں، سپریم کورٹ نے کہا ہے پاکستان کے ادارے ناکام ہوچکے ہیں، اداروں کو جو کام کرنا چاہئے تھا وہ نہیں کررہے ہیں،

رانا ثناء اللہ کے حوالے سے عمران خان نے کہا کہ وزیرقانون پنجاب نے ہڑتال سے متعلق شرمناک بیان دیا ہے، راناثنا اللہ کا بیان احمقانہ ہے اس کی مذمت کرتا ہوں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں