تجاوزات سے متعلق حکومت کا با ضابطہ بیان جاری -
The news is by your side.

Advertisement

تجاوزات سے متعلق حکومت کا با ضابطہ بیان جاری

اسلام آباد: حکومت نے ملک بھر میں تجاوزات کے خلاف آپریشن سے متعلق با ضابطہ بیان جاری کر دیا، افتخار درّانی نے کہا کہ اینٹی انکروچمنٹ آپریشن پر خصوصی کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیرِ اعظم کے معاونِ خصوصی افتخار درّانی نے نیوز کانفرنس میں کہا کہ شہریار آفریدی کی سربراہی میں اینٹی انکروچمنٹ آپریشن پر کمیٹی بنائی گئی ہے، انکروچمنٹ کے خلاف آپریشن خیبر پختونخوا اور پنجاب میں بھی ہو رہا ہے۔

کابینہ نے 50 روپے والے سکے کی منظوری دی ہے، پی ٹی آئی کے پی میں رائٹ ٹو انفارمیشن بل لے کر آئی ہے۔

افتخار درانی معاونِ خصوصی برائے وزیرِ اعظم

انھوں نے کہا کہ تجاوزات مہم کے خلاف منفی تاثر پھیلایا جا رہا ہے، کراچی میں انکروچمنٹ آپریشن سپریم کورٹ کے حکم پر ہو رہا ہے، متاثر چھوٹے کاروبار والوں کی مدد کریں گے، گلیات میں بھی بڑے لوگوں سے زمینیں واپس لی گئیں، کوشش ہے ریاستِ مدینہ کے گورننس آرڈر کو فالو کریں۔

ان کا کہنا تھا کہ غریبوں کے گھر یا کاروبار خراب نہیں ہونے دیں گے، غریب، ریٹائرڈ افراد کو تحفظ دیا جائے گا، ریاست غریب کو تنہا نہیں چھوڑے گی۔

معاونِ خصوصی نے کہا کہ ہم طاقت ور اور ظالم کو قانون کے دائرے میں لا رہے ہیں، اعظم سواتی کی استعفے کی خبر میں نے میڈیا کو دی تھی، اعظم سواتی کابینہ کے ممبر نہیں، ان کا استعفیٰ منظور ہو گیا ہے، اپوزیشن کے پاس بیچنے کو کچھ نہیں وہ منجن کی تلاش میں ہیں۔

افتخار درّانی نے مزید کہا کہ کابینہ نے 50 روپے والے سکے کی منظوری دی ہے، پی ٹی آئی کے پی میں رائٹ ٹو انفارمیشن بل لے کر آئی، وزیرِ اعظم شفافیت پر بہت یقین کرتے ہیں۔


یہ بھی پڑھیں:  وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اہم اجلاس 


معاونِ خصوصی نے کہا کہ اینٹی منی لانڈرنگ معاہدے کے لیے کینیڈا سے رابطہ کیا جائے گا، زمبابوے کے ساتھ بھی ایک معاہدے پر دستخط ہوئے ہیں۔  پیسے والوں کے کرائم کا طریقہ انوکھا ہوتا ہے، پراسیکیویشن کی کم زوری دور کرنے کی کوشش ہونی چاہیے۔

انھوں نے مزید کہا کہ ایکسپورٹ انڈسٹری کے لیے 25.5 بلین کی گیس سبسڈی دی گئی، ہماری پالیسی ہے ایکسپورٹ اور انڈسٹریز میں اضافہ ہو۔ 100 دن میں وفاقی کابینہ کے 15 اجلاس ہوئے، وفاقی کابینہ کے فیصلوں پر تیزی سے کام ہو رہا ہے۔

افتخار درّانی کا کہنا تھا کہ اسلام آباد ہائی کورٹ کے ججز کی تعداد 6 سے بڑھا کر 9 کر دی گئی ہے، کابینہ نے 1.1 ملین ٹن چینی برآمد کرنے کی بھی منظوری دی ہے، کابینہ نے گندم برآمد کرنے کی بھی منظوری دی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں