The news is by your side.

’میرے قتل کا منصوبہ بنانے والے لوگ انتہائی طاقتور ہیں‘

 سابق وزیراعظم اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان کا کہنا ہے کہ میرے قتل کا منصوبہ بنانے والے لوگ انتہائی طاقتور ہیں۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے ترکیہ کے نشریاتی ادارے ’ٹی آر ٹی‘ کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا  کہ مجھ پر حملہ کرنے والے اتنے طاقتور ہیں کہ بلٹ پروف کا بھی کوئی فائدہ نہیں وہ اڑانے کے لیے کوئی دوسرا طریقہ نکال لیں گے۔

انہوں نے کہا کہ حملے کے ذمہ دار خود کو بھی حملے کی آڑ میں چھپانا چاہ رہے ہیں۔

’حملہ کرنے والے ملزم کی مذہبی جنونیت چھوڑ دیں لگتا یہی ہے وہ تربیت یافتہ ہے‘

عمران خان نے کہا کہ مخالفین نے بیانیہ بنایا کہ مجھ پرحملہ کسی مذہبی جنونی نے کیا جس نے مجھ پر حملہ کیا شواہد آرہے ہیں کہ وہ کوئی مذہبی شدت پسند نہیں تھا۔

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ آج کل سوشل میڈیا بہت متحرک ہے بہت سے حقائق سامنے آجاتے ہیں، لوگوں نے ملزم کے پڑوسیوں اور جان پہچان والے لوگوں سے بات چیت کی اس کے پڑوسیوں نے بتایا کہ وہ تو نماز تک نہیں پڑھتا تھا تو مذہبی کیسے ہوگیا۔

انہوں نے کہا کہ ملزم کی مذہبی جنونیت کو چھوڑ ہی دیں فائرنگ سے لگتا یہی ہے کہ تربیت یافتہ ہے۔

ملک میں معاشی استحکام سیاسی استحکام کے بغیر ناممکن ہے

عمران خان کا کہنا ہے کہ عوام میں شعورکا جن بوتل سے باہرآچکا ہےاسے دوبارہ بوتل میں بن نہیں کیا جاسکتا، انقلاب کے 2 ہی راستے ہیں ایک راستہ پرامن اور بیلٹ کے ذریعے ہے اور دوسرا راستہ وہ ہے جس میں معاملات سب کے ہاتھ سے نکل جائیں اگر خونی انقلاب آیا جیسے ایران میں آیا تھا تو پھر سمت کا تعین نہیں کیا جاسکتا، ہم سب کی دعائیں ہیں کہ ملک میں خونی انقلاب نہ آئے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ملک معاشی طور پر مستحکم نہیں ہے معاشی استحکام سیاسی استحکام کے بغیر ناممکن ہے اور سیاسی استحکام صرف الیکشن کے ذریعے ہی آسکتا ہے۔

مسائل کا ایک ہی حل ہے کہ انتخابات ہوں اور عوام اپنی قیادت منتخب کریں

انہوں نے کہا کہ میرے ساتھ جو ہورہا ہے یہ ہمارا اندرونی معاملہ ہے اسے اندرونی طور پر حل کریں گے، بیرونی طاقتیں اس وقت اثر انداز ہوتی ہیں جب ان کے پاس آپ کی کمزوری ہے۔

انہوں نے کہا کہ مسائل کا ایک ہی حل ہے کہ انتخابات ہوں اور عوام اپنی قیادت منتخب کریں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں