The news is by your side.

Advertisement

دو نومبر کوفیصلہ ہوگا پاکستان میں جمہوریت رہے گی یابادشاہت،عمران خان

اسلام آباد : تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کا کہنا ہے کہ دو نومبر کوفیصلہ ہوگا پاکستان میں جمہوریت رہے گی یابادشاہت، جمہوریت ڈی ریل کئے بغیر پاناما کا احتساب چاہتے ہیں۔

تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان اسلام آباد نے ہائیکورٹ بار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جمہوریت ڈی ریل کئے بغیر پاناما کا احتساب چاہتے ہیں، پاناما پیپرز الزامات نہیں ثبوت ہیں، وزیراعظم رنگے ہاتھوں پکڑے گئے ہیں، وزیراعظم نے آج تک کلبھوشن یادیو کا نام نہں لیا اور دو نومبر کوفیصلہ ہوگا پاکستان میں جمہوریت رہے گی یابادشاہت۔

عمران خان نے کہا کہ ٹی وی پر موٹوگینگ کے جھوٹ بول بول کر منہ لال ہوجاتا ہے، میری جدوجہد وزیر اعظم بننے کیلئے نہیں، پاکستان میں انتخابات تو ہتے ہیں لیکن ملک میں بادشاہت ہے، عدلیہ آزاد ہوگی تو ملک میں کرپشن کیخلاف کاروائی ہوگی۔

انکا مزید کہنا تھا کہ ہم کہتے تھے دھاندلی ہوئی ہے ، چار حلقے کھولے جائیں ، چار قانون توڑنے والا کونسی جہموریت میں وزیر اعظم رہ سکتا ہے ، جب وزیر اعظم کرپشن کرتا ہے تو ملک کے ادارے تباہ کرتا ہے، ملک کرپشن سے نہین عدلیہ اور اداروں کی تباہی سے ختم ہوتے ہیں۔

عمران خان نے خورشید شاہ کو ڈبل شاہ قرار دے دیا۔

کپتان نے خواجہ آصف کو بھی آڑے ہاتھوں لے لیا اور کہا کہ خواجہ آصف کہتا ہے فکر نہ کریں لوگ پاناما کو بھول جائیں گے ، بے شرم آدمی تمہارے باپ کا پیسہ ہے جو بھول جائیں گے

تحریک انصاف کے سربراہ کا آئس لیںڈ کے وزیراعظم کے پانامہ پیپرز میں نام آنے کے حوالے سے کہنا تھا کہ آئس لینڈ کے لوگ سڑکوں پر آئے تو وزیر اعظم کو استعفیٰ دینا پڑا، آئس لینڈ کے وزیراعظم کو پتہ تھا ، عدلیہ آزاد ہے نہیں بچ سکوں گا۔


مزید پڑھیں : چاہے کچھ بھی ہوجائے 2 نومبر کا دھرنا کسی صورت مؤخر نہیں ہوگا


یاد رہے گذشتہ روز عمران خان نے وزیراعظم نواز شریف کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا تھا کہ بلوچستان کے وزیر اعلیٰ نے واضح طور پر کہا ہے کہ بھارت بلوچستان میں دہشت گردی کروا رہا ہے تو وزیر اعظم اس معاملے کو اقوام متحدہ اور دیگر بین الاقوامی فورمز پر کیوں نہیں اٹھاتے۔

عمران خان نے واضح طور کہا کہ چاہے کچھ بھی ہوجائے 2 نومبر کا دھرنا کسی صورت مؤخر نہیں کیا جائے گا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں