The news is by your side.

دفعہ144 کا کیس: عمران خان کی حاضری سےاستثنیٰ کی درخواست منظور

اسلام آباد: سیشن عدالت نے دفعہ 144 کے کیس میں پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان سمیت دیگر رہنماؤں کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست منظور کرلی۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد کی سیشن عدالت میں پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان سمیت دیگر پی ٹی آئی رہنماؤں کے خلاف دفعہ 144 کی خلاف ورزی کے مقدمے کی سماعت ہوئی۔

ایڈیشنل سیشن جج ظفر اقبال نے کیس کی سماعت کی، فیصل واوڈا کے وکیل سردار مصروف خان نے کہا کہ فیصل واوڈا عمرے کی ادائیگی پر گئے ہیں لہذا آج حاضری سے معافی کی درخواست منظور کی جائے۔

بابر اعوان نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ عمران خان آج پیش نہیں ہوں گے، لہذا حاضری سے استثنی کی درخواست منظور کی جائے،عمران خان 9 حلقوں سے الیکشن لڑ رہے ہیں۔

عدالت نے استفسار کیا کہ الیکشن کب ہو رہے ہیں جس پر بابر اعوان نے عدالت کو بتایا کہ الیکشن 25 ستمبر کو ہو رہے ہیں، تھانہ آبپارہ میں درج مقدمہ میں دفعات قابل ضمانت ہیں۔

وکیل کا کہنا تھا کہ عمران خان کے خلاف یہ 21واں مقدمہ ہے جس میں ضمانت لے رہے ہیں، دفعہ 560 آئی آئی میں تین سال سزا ہے، جس پر جج نے ریمارکس دیے کہ یہ دفعہ ناقابل ضمانت ہے۔

بابر اعوان نے عدالت کو بتایا کہ اسد عمر راستے میں ہیں، جب ان پر مقدمہ ہوا تو وہ لاہور میں تھے، اسد عمر کی ویڈیو ریکارڈنگ بھی موجود تھی۔

جج نے تفتیشی افسر کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اسد عمر کی حد تک میرٹ پر تفتیش کریں، اگر اسد عمر شامل نہیں ہیں تو ان کو مقدمہ سے فارغ کر دیں۔

اسد قیصر کے وکیل شجر عباس ہمدانی نے بھی حاضری سے استثنی کی درخواست دائر کر دی۔

وکیل شجر عباس ہمدانی نے کہا کہ اسد قیصر کا پشاور میں کیس تھا اس لیے پیش نہیں ہوں گے، جس پر جج نے ریمارکس دیے کہ ضمانت کی اسٹیج پر ہم کیسے ملزم کو مقدمہ سے بری کر سکتے ہیں۔

فیاض الحسن چوہان کے وکیل نے بھی عدالت سے استدعا کی کہ انہیں مقدمے سے بری کیا جائے۔

جس پر عدالت نے عمران خان،اسد عمر،اسد قیصر اور فیصل واوڈا کی استثنی کی درخواست منظور کرتے ہوئے ملزمان کی درخواست ضمانت میں 27 ستمبر تک توسیع کردی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں