قانون سازی کے عمل میں مزید تاخیر برداشت نہیں کی جائے گی: وزیرِ اعظم -
The news is by your side.

Advertisement

قانون سازی کے عمل میں مزید تاخیر برداشت نہیں کی جائے گی: وزیرِ اعظم

اسلام آباد: وزیرِ اعظم عمران خان نے قانون سازی کے عمل میں مزید تاخیر برداشت نہ کرنے کا فیصلہ کر لیا، حکومت نے قانون سازی کے لیے کمر کس لی۔

تفصیلات کے مطابق حکومت نے قانون سازی کے عمل میں مزید تاخیر نہ کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے کمر کس لی، قائمہ کمیٹیوں کی تشکیل میں پیش رفت کا عمل شروع ہو گیا۔

حکومت مسلم لیگ ن کے بغیر قائمہ کمیٹیوں کی تشکیل کا جائزہ لے گی۔

ذرائع

وزیرِ اعظم عمران خان نے کمیٹیوں کی تشکیل پر اجلاس طلب کر لیا، یہ اجلاس پیر کو وزیرِ اعظم کی صدارت میں ہو گا۔

ذرائع کے مطابق اجلاس میں اپوزیشن سے متعلق حکمتِ عملی کو بھی حتمی شکل دی جائے گی، اپوزیشن نے پی اے سی (پبلک اکاؤنٹس کمیٹی) کے معاملے پر کمیٹیوں کا حصہ بننے سے انکار کر رکھا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومت مسلم لیگ ن کے بغیر قائمہ کمیٹیوں کی تشکیل کا جائزہ لے گی، اس سلسلے میں شاہ محمود قریشی، اسد عمر اور چیف وہپ عامر ڈوگر نے ہوم ورک مکمل کر لیا۔

ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ قومی اسمبلی میں پی ٹی آئی کے چیف وہپ عامر ڈوگر بریفنگ دیں گے، چیئرمین پی اے سی سے متعلق اپوزیشن سے مذاکرات سے آگاہ کیا جائے گا۔


یہ بھی پڑھیں:  منی لانڈرنگ کی روک تھام کے لئے ایک ہفتے میں قانون سازی کی جائے: وزیراعظم


ذرائع کے مطابق اجلاس میں چیئرمین پی اے سی سے متعلق اہم فیصلہ متوقع ہے، خیال رہے کہ قائمہ کمیٹیاں نہ بننے سے 100 دن میں کوئی قانون سازی نہ ہو سکی۔

گزشتہ روز وزیرِ اعظم عمران خان نے منی لانڈرنگ کی روک تھام کے لیے ایک ہفتے میں قانون سازی مکمل کرنے کی ہدایت کی تھی، وزیرِ اعظم نے کہا کہ قانون سازی اس قدر مؤثر ہو کہ حوالہ ہنڈی کے کاروبار کو پکڑا جا سکے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں