پاناماکیس ، تحریک انصاف نے شریف فیملی کے خلاف شواہد سپریم کورٹ میں جمع کرادیے -
The news is by your side.

Advertisement

پاناماکیس ، تحریک انصاف نے شریف فیملی کے خلاف شواہد سپریم کورٹ میں جمع کرادیے

اسلام آباد : تحریک انصاف نے پاناماکیس میں شریف فیملی کے خلاف شواہد سپریم کورٹ میں جمع کرادیئے۔

تفصیلات کے مطابق پاناما لیکس کیس کی چوتھی سماعت سے قبل پی ٹی آئی نے شریف خاندان کے اثاثوں کی تفصیلات اور دستاویزی شواہد سپریم کورٹ میں جمع کرادیے، پی ٹی آئی کی جانب سے وکیل حامد خان نے دستاویزات عدالت میں جمع کرائے۔

پی ٹی آئی کی جانب سے جمع کرائے جانے والے دستاویزات چھ سو سے زائد صفحات پر مشتمل ہیں، ذرائع کے مطابق 686 صفحات پر مشتمل اضافی دستاویزات میں بینک کھاتوں اور شریف خاندان کے قرض معافی کے شواہد شامل ہیں۔

دستاویزات کے مطابق 1988سے 1991تک 56ملین روپے ہنڈی جبکہ 145ملین روپے منی لانڈرنگ کے ذریعے بیرون ملک منتقل کیے گئے۔ نوازشریف نے اس دوران صرف 897روپے انکم ٹیکس ادا کیا اور بیرون ملک بھجوائی گئی رقم کا ٹیکس گوشواروں میں ذکر نہیں کیا ۔

ذرائع کے مطابق نوازشریف کے کاروباری شراکت دارخالد سراج نے منی لانڈرنگ سے پردہ اٹھایا ہے، دستاویزات میں شریف خاندان کے قرض معاف کرانے سے متعلق دستاویزات میں انکشاف کیا گیا ہے کہ شریف خاندان کے ذمے 6146ملین روپے کے بینک قرضہ جات ہیں، نوازشریف کے وزارت اعلیٰ کے دور میں شریف خاندان کی انڈسٹری نے تیزی سے ترقی کی۔

دوسری جانب ترجمان تحریک انصاف نعیم الحق کا کہنا ہے کہ وزیراعظم پاناما لیکس پرشروع ہی سے جواب دینے سے گریز کررہے ہیں، نوازشریف اور ان کے خاندان کو جواب تو دینا پڑے گا، ہوسکتا ہے شرفی خاندان کے نئے وکیل اکرم شیخ عدالت کے سامنے بہانے کریں۔


مزید پڑھیں: پاناما لیکس: سپریم کورٹ کاتمام فریقین کو15نومبرتک دستاویزات جمع کرنے کا حکم


یاد رہے کہ پانامالیکس سے متعلق کیس میں عدالت نے تمام فریقین کو 15نومبر تک متعلقہ دستاویزات جمع کرانے کا حکم دے دیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں