The news is by your side.

Advertisement

پنجاب میں فوڈ، ایگریکلچر اینڈ ڈرگ ٹیسٹنگ اتھارٹی کے قیام کا آرڈیننس جاری

پنجاب حکومت نے ملاوٹ کی روک تھام کے لیے فوڈ، ایگریکلچر اینڈ ڈرگ ٹیسٹنگ اتھارٹی کے قیام کا آرڈیننس جاری کردیا۔

پنجاب حکومت نے ملاوٹ کرنے والوں کے خلاف شکنجہ سخت کرنے کا فیصلہ کر لیا جس کے لیے فوڈ، ایگریکلچر اینڈ ڈرگ ٹیسٹنگ اتھارٹی کے قیام عمل میں لایا جا رہا ہے۔ اس سلسلے میں آرڈیننس بھی جاری کر دیا گیا ہے۔

اتھارٹی کے چیئرمین وزیر اعلیٰ پنجاب ہوں گے جبکہ ممبران میں صوبائی وزیر زراعت، وزیر خوراک اور 5 سائنسدان شامل ہوں گے۔ اتھارٹی خود مختار ہوگی اور آزادانہ کام کرے گی۔ اتھارٹی فرٹیلائزر، پیسٹیسائیڈز، خوراک اور ڈرگز کی ٹیسٹنگ اور فرانزک ایگزامینیشن کے لیے کام کرے گی۔

مزید پڑھیں: لیہ میں زہریلی مٹھائی سے اموات کی تعداد 30 ہوگئی

اتھارٹی ٹیسٹ کرنے کے لیے نمونہ جات کے حصول اور ٹیسٹ رپورٹس کی مقررہ مدت میں فراہمی یقینی بنائے گی۔ ٹیسٹنگ کی معیاری سہولیات کی فراہمی کے لیے بین الاقوامی سطح پر ہونے والی جدید تکنیک سے استفادہ کیا جائے گا۔

نمونہ جات کی غلط رپورٹ دینے پر 1 ماہ سے 3 سال قید ،25 ہزار سے 3 لاکھ روپے جرمانہ کی سزا مقرر کی گئی ہے۔ اتھارٹی حکومت سے ملنے والی گرانٹ کے علاوہ فیس اور جرمانوں سے اپنے اخراجات پورے کرے گی۔

مزید پڑھیں: فیصل آباد میں زہریلا دودھ پینے سے 100 افراد کی حالت غیر

پنجاب میں پچھلے کچھ دن میں مضر صحت کھانوں سے کئی حادثات ہو چکے ہیں۔ لیہ میں زہریلی مٹھائی سے 30 افراد جاں بحق ہوگئے۔ فیصل آباد میں زہریلا دودھ پینے سے 100 سے زائد افراد کی حالت غیر ہوگئی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں