The news is by your side.

Advertisement

سانحہ مستونگ کی تحقیقات، پنجاب فرانزک ایجنسی ٹیم کوئٹہ پہنچ گئی

کوئٹہ : سانحہ مستونگ کی تحقیقات کے لئے پنجاب فرانزک ایجنسی ٹیم کوئٹہ پہنچ گئی، ڈی آئی جی عبدالرزاق چیمہ کا کہنا ہے کہ ٹیم خودکش حملے کے مقام کا دورہ کرکے شواہد اکٹھے کرے گی ، جو فرانزک ایجنسی کی ٹیم کے حوالے کیے جائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب فرانزک ایجنسی ٹیم سانحہ مستونگ کی تحقیقات کے لیے کوئٹہ پہنچ گئی ہے، اس موقع پر ڈی آئی جی کوئٹہ عبدالرزاق چیمہ کا کہنا ہے کہ فرانزک ایجنسی کی ٹیم تین ماہرین پرمشتمل ہے، ٹیم جائے وقوعہ کا دورہ کرکے شواہد اکٹھے کرے گی جبکہ متعلقہ لیویز اور ضلعی انتظامیہ نے بھی شواہد اکٹھے کئے ہیں۔

ڈی آئی جی کوئٹہ کا کہنا تھا کہ شواہد فرانزک ایجنسی کی ٹیم کے حوالے کیے جائیں گے، مبینہ خودکش حملہ آورکی شناخت کے لیے نمونے حاصل کیے جاچکے ہیں،  ڈی این اے نمونے بھی فرانزک ایجنسی کی ٹیم کے حوالے کئے جائیں گے۔

اس سے مستونگ خود کش حملے کی نئی فوٹیج بھی سامنے آئی، فوٹیج میں دیکھا جاسکتا ہے کہ سراج رئیسانی کی تقریر جیسے ہی شروع ہوئی زور دار دھماکا ہوگی، سیکیورٹی انچارج کو اپنی طرف آتا دیکھا اور خود کش بمبار نے خود کو اڑا دیا، جس کے بعد ہر طرف چیخ و پکار مچ گئی۔


مزید پڑھیں : سانحہ مستونگ کے مزید زخمی دم توڑ گئے‘ شہداء کی تعداد 149 ہوگئی


ڈپٹی کمشنر مستونگ قائم لاشاری کی جانب سے  شہداء اور زخمیوں کے تمام کوائف حاصل کر کے رپورٹ مکمل کر لی گئی ہے، جس کے مطابق درینگڑھ خود کش دھماکے کے فوری بعد جاں بحق ہونے والے 18 افراد کی میتیں لواحقین جائے وقوعہ سے ہی اپنے گھروں کو لے گئے۔ ان شہداء کی میتیں اسپتال نہیں لائی گئیں۔

یاد رہے کہ دو روز قبل صوبہ بلوچستان کے ضلع مستونگ کے علاقے درینگڑھ میں بلوچستان عوامی پارٹی کی کارنرمیٹنگ میں دھماکا ہوا جس کے نتیجے میں سراج رئیسانی سمیت 149 افراد شہید جبکہ 186 زخمی ہوگئے۔

مستونگ دھماکے میں زخمی ہونے والے سو سے زائد افراد کوئٹہ کے سول اسپتال میں زیرعلاج ہیں جن میں سے متعدد کی حالت تشویشناک ہے۔

بم ڈسپوزل اسکواڈ نے مستونگ دھماکے کو خودکش قرار دیتے ہوئے کہا کہ دھماکے میں 16 سے 20 کلو دھماکہ خیز مواد استعمال کیا گیا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں