پنجاب حکومت نےپولیو سمیت بچوں کی جان بچانے والی ویکسین پر ٹیکس عائد کردیا -
The news is by your side.

Advertisement

پنجاب حکومت نےپولیو سمیت بچوں کی جان بچانے والی ویکسین پر ٹیکس عائد کردیا

لاہور: پنجاب حکومت نے بچوں کو مختلف بیماریوں سے بچانے والی ویکسینیشن پر ٹیکس عائد کردیا ہے‘ جس سے بچوں کی صحت کے حوالے سے حکومتی کارکردگی پر سوالات پیدا ہوگئے ہیں، وفاقی محکمہ صحت نے بھی تحفظات کا اظہار کردیا۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب کی افسر شاہی نے صوبے کے خزانے میں اضافے کے لیے پولیو سمیت بچوں کو نو بیماریوں سے بچانے والی ویکسین پر ٹیکس عائد کیا ہے ۔

ذرائع کے مطابق ویکسین پر ٹیکس اعشاریہ نو فیصد عائد کیا گیاہے جسے وفاقی محکمہ صحت کی جانب سے واپس لینے کا مطالبہ کیا گیا ہےتاہم پنجاب ریوی نیواتھارٹی نے یہ ٹیکس واپس لینے سے انکار کردیا ہے۔

پنجاب ریونیو اتھارٹی کی جانب سے وفاقی محکمہ صحت کی درخواست مسترد کیے جانے کے بعد وفاقی محکمہ نے چیف سیکرٹری پنجاب سے رابطہ
کیا اور مہلک بیماریوں کیخلاف چلائی جانیوالی مہمات کو پہنچنے والے نقصانا ت سے آگاہ کیاہے۔

واضح رہے کہ پولیو کی ویکسین عالمی ادارہ صحت کی جانب سے 70 لاکھ بچوں کے لیے مفت فراہم کی جاتی ہے۔ پنجاب حکومت کی جانب سے ٹیکس انفرا اسٹرکچر ڈیولپمنٹ کی مد میں عائد کیا گیا ہے۔

یہاں یہ بھی یاد رکھنا ضرور ی ہے کہ پاکستان کے چند علاقوں میں بچوں کو پولیو ویکسین کےپلانے کے خلاف ہچکچکاہٹ پائی جاتی ہے اور پولیو ورکرز کو نشانہ بنانے کے کثیر تعداد میں واقعات رونما ہوچکے ہیں جن میں پولیوورکرز اپنی جان سے بھی ہاتھ دھوچکے ہیں۔

ادھر پنجاب میں ہی راولپنڈی کے علاقے صفدرآباد اور لاہور کے علاقے سبزہ زار کے اگست کے ماحولیاتی نمونوں میں پولیو وائرس کی تصدیق بھی ہو گئی ہے۔

اس وقت دنیا میں پاکستان اور افغانستان محض دو ممالک ایسے رہ گئے ہیں جہاں پولیو وائرس کے کیسز رپورٹ ہوتے ہیں ‘ 2014 سے قبل نائجیریا بھی اسی فہرست میں شامل تھا تاہم بروقت اقدامات کے ذریعے اس پر قابو پالیا گیا ہے۔

دوسری جانب اب سے چند دن قبل وفاقی وزیرِ منصوبہ احسن اقبال نےیہ بھی اعتراف کیا تھا کہ پاکستان میں بچوں کی بیماریوں کے سبب اموات کی شرح دنیا میں سب سے زیادہ ہے ایسے میں پنجاب حکومت کی جانب سے یہ اقدام صوبے کے عوام کے بنیادی حقوق کو مجروح کرنے کےبرابر ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں