پنجاب کے تعلیمی اداروں میں کبڈی کھیلنے پر پابندی عائد bans Kabaddi
The news is by your side.

Advertisement

پنجاب کے تعلیمی اداروں میں کبڈی کھیلنے پر پابندی عائد

لاہور: سرکاری اسکول میں تھپڑوں کے کھیل سے طالب علم کی ہلاکت کے بعد پنجاب حکومت نے تعلیمی اداروں میں کبڈی کھیلنے پر پابندی عائد کردی۔

تفصیلات کے مطابق محسن وال کے سرکاری اسکول میں تھپڑوں کے کھیل سے طالب علم بلال کی ہلاکت کے بعد پنجاب کے تعلیمی اداروں میں بریک کے دوران کبڈی اور اس طرح کے دوسرے کھیل جن سے کھلاڑی کی زندگی کو خطرات لاحق ہوں کے کھیلنے پر مکمل پابندی عائد کردی ہے۔

اس حوالے سے پنجاب حکومت کی جانب سے نوٹیفکیشن جاری کیا گیا ہے جس میں تعلیمی اداروں کے سربراہان اور بریک کے ذمہ داران اساتذہ پر ذمہ داری عائد کی گئی ہے کہ وہ بریک کے دوران اور دیگر اوقات میں تعلیمی اداروں میں کبڈی اور دیگر خطرناک جسمانی کھیلوں پر پابندی عائد کریں۔

پنجاب حکومت نے تمام ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹیز کو مراسلہ جاری کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ کبڈی اور اس جیسے کھیل حادثات کا باعث بنتے ہیں، تعلیمی اداروں میں بریک ٹائم کے دوران انچارج بریک ٹائم کبڈی اور اس جیسے دوسرے کھیل کو روکیں گے۔

مراسلے میں کہا گیا ہے کہ احکامات کی خلاف ورزی کرنے پر تعلیمی اداروں کے سربراہان کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

مزید پڑھیں: اسکول میں تھپڑ مارنے کا کھیل، طالب علم جان سے ہاتھ دھو بیٹھا

واضح رہے کہ میاں چنوں کے علاقے محسن وال کے سرکاری اسکول میں دو بچے ایک دوسرے کو تھپڑ مارنے کا مقابلہ کررہے تھے اور باقی لڑکے ان کے گرد کھڑے ان کو جوش دلا رہے تھے کہ بلال نامی طالب علم عامر کا تھپڑ کھا کر گرا اور موت کے منہ میں چلا گیا تھا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں