The news is by your side.

Advertisement

پنجاب حکومت کا نوازشریف کی ضمانت مسترد کرنے کیلیے ہائیکورٹ کوخط

اسلام آباد : پنجاب حکومت نے سابق وزیراعظم نواز شریف کی ضمانت مسترد کرنے کے لیے اسلام آباد ہائی کورٹ میں خط جمع کرادیا، جس میں کہا گیا نوازشریف طبی بنیادوں پر پنجاب حکومت کو مطمئن نہیں کرسکے۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت نے سابق وزیراعظم نواز شریف کی ضمانت میں توسیع کے معاملے پر ہائی کورٹ کو خط لکھ دیا ، نوازشریف کی ایک اپیل اسلام آباد ہائیکورٹ میں زیر سماعت ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پنجاب حکومت نے نواز شریف کی ضمانت مسترد کرنے کیلئے ہائی کورٹ کو آگاہ کیا اور ساتھ ہی نوازشریف کی ضمانت مسترد کرنے کی درخواست جمع کرادی ہے۔

خط میں کہا گیا ہے کہ نوازشریف طبی بنیادوں پر پنجاب حکومت کو مطمئن نہیں کرسکے، کمیٹی کی تجویز پنجاب حکومت کو بھیجی ، جس نے ضمانت میں توسیع مسترد کردی۔

مزید پڑھیں : پنجاب حکومت نے نوازشریف کی ضمانت میں توسیع کی درخواست مسترد کردی

یاد رہے پنجاب کابینہ نے نوازشریف کی ضمانت میں توسیع کی درخواست مسترد کردی تھی ، راجہ بشارت کا کہنا تھا کہ نوازشریف 16ہفتوں سے آج تک لندن کے کسی اسپتال میں ایڈمٹ نہیں ہوئے، وزیراعلیٰ پنجاب کی ہدایت پر درخواست پرمیڈیکل بورڈ تشکیل دیا گیا جس نے متعدد اجلاس کئے اور تمام رپورٹس کا جائزہ لیا، میڈیکل بورڈ نے رپورٹس پر عدم اطمینان کا اظہار کیا۔

راجہ بشارت کا کہنا تھا کہ نوازشریف کا کوئی آپریشن ہوا نہ ہی کوئی آپریشن ہونے کی اطلاع دی گئی، ابھی تک کوئی آپریشن نہیں ہوا اور نہ ہی ہمیں کوئی ایسی اطلاع دی گئی، معاملے سے لگ رہا ہے ضمانت کیلئے معاملے کو طول دینے کی کوشش کی جارہی ہے، لہٰذا نوازشریف کی ضمانت میں توسیع قانونی اور طبی لحاظ سے نہیں بنتی۔

بعد ازاں پنجاب حکومت نے وفاقی حکومت کو لکھے گئے مراسلے ارسال کیا تھا ، جس میں نوازشریف کی ضمانت میں توسیع کی درخواست مسترد کرتے ہوئے مجرم نواز شریف کے خلاف مزید کارروائی تیز کرنے کی درخواست کی تھی۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں