پولیس اہلکارکوتھپڑمارنے والے ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل خاوربھٹی فارغ punjab
The news is by your side.

Advertisement

پولیس اہلکارکوتھپڑمارنے والے ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل خاوربھٹی فارغ

لاہور : پنجاب حکومت نے ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل خاوربھٹی کو احتساب عدالت کے باہر پولیس افسر کو تھپڑ مارنے پر فارغ کر دیا ہے.

تفصیلات کے مطابق 13 اکتوبر کو احتساب عدالت میں مریم نواز کی پیشی کے موقع پر وکلا اور پولیس کے درمیان ہونے والی مڈ بھیڑ کے دوران ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل خاور انعام بھٹی نے پولیس اہلکار کو تھپڑ رسید کیا تھا جس کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد لوگوں نے تنقید اور غصے کا اظہار کیا تھا.

خیال رہے وقوعے کے بعد پولیس انسپکٹر شکیل احمد نے رمنا تھانے میں مقدمہ بھی درج کروایا تھا جس میں کارسرکار میں مداخلت اور زدوکوب کرنے کی دفعات شامل تھیں۔

تاہم آج حکومت پنجاب کی جانب سے جاری کیئے گئے سرکاری مراسلے میں ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل خاورانعام بھٹی کو فارغ کیئے جانے کے احکامات جاری کیئے ہیں.

 اسی سے متعلق : احتساب عدالت میں بدمزگی‘ سماعت بغیرکارروائی کے 19اکتوبرتک ملتوی

یاد رہے کہ 13 اکتوبر کو شریف خاندان کی پیشی کے موقع پر جہاں کارکنان اور رہنماؤں کی بڑی تعداد پہنچی تھی وہیں وکلاء کی کثیر تعداد بھی احتساب عدالت پہنچی تاہم کمرہ عدالت میں جگہ کم ہونے کے باعث انہیں اندرنہیں جانے دیا گا جب کہ وکلا نے اسلام آباد ہائی کورٹ کا اجازت نامہ بھی دکھایا تھا.

جس کے بعد ہنگامہ آرائی شروع ہوگئی اور پولیس کے تشدد اور دھکم پیل سے خاتون وکیل سمیت دو وکیل زخمی ہوئے تھے اور اسی دوران خاور بھٹی نے ڈیوٹی پر مامور پولیس افسر کو تھپڑ رسید کردیا تھا.

دوسری جانب ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل کا کہنا ہے کہ میں نےانسپکٹر کوتھپڑنہیں مارا، پیار سےہاتھ لگایا تھا اس وقت بہت مجمع تھا اور دھکم پیل ہو رہی تھی جس کی وجہ سے لوگوں کو شاید غلط گمان ہوا کہ میں تھپڑ مارا ہے۔

انہوں نے کہا کہ احتساب عدالت کے باہر ہنگامہ آرائی کی کوئی پلاننگ نہیں کی گئی تھی اور نہ ایک رات قبل پنجاب ہاؤس میں کوئی ملاقات ہوئی تھی اس حوالے سے پھیلائی جانے والی خبریں جھوٹ پر مبنی ہیں اور سراسر بے بنیاد ہیں۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں