The news is by your side.

Advertisement

محکمہ صحت پنجاب نے بوسٹر ڈوز لگانے کی عمر میں کمی کردی

لاہور : محکمہ صحت پنجاب نے 18 سال سے زائد عمر کے افراد کو بوسٹر ڈوز لگانے کا فیصلہ کرلیا، کرونا سے ریکور افراد 28 دن بعد بوسٹر ڈوز لگوا سکتے ہیں۔

محکمہ صحت پنجاب نے شہریوں کو بوسٹر ڈوز لگانے کےلیے ڈائریکٹر جنرل ہیلتھ نے پنجاب کے چیف ایگزیکٹو آفیسرز ہیلتھ کو مراسلہ جاری کردیا، مراسلے میں کہا گیا ہے کہ بوسٹر ڈوز کےلیے آخری خوراک اور بوسٹر ڈوز کے درمیان چھ ماہ کا وقفہ لازمی ہونا چاہیے۔

محکمہ صحت پنجاب نے مراسلے میں کہا ہے کہ بوسٹر ڈوز 18 سال سے زائد عمر کے افراد کو لگائی جائے گی، ان کے علاوہ کرونا سے ریکور افراد 28 دن بعد بوسٹر ڈوز لگا سکیں گے۔

ڈی جی ہیلتھ نے کہا کہ بوسٹر ڈوز کے طور پر فائزر، موڈرنا، ایسٹرازینیکا، سائنو فام اور سائنو ویک لگ سکیں گی۔

اس سلسلے میں ڈائریکٹر جنرل پنجاب نے صوبے کے تمام ویکسی نیشن سینٹرز میں ویکسین کی تمام اقسام ممکن بنانے کی ہدایت کردی۔

پاکستان میں کورونا کی بوسٹرڈوز کیلئے عمر کی حد میں کمی اعلان

یاد رہے یکم دسمبر کو این سی اوسی نے کورونا ویکسین کی بوسٹر ڈوز لگانے کی منظوری دی تھی ، پہلے مرحلے میں فرنٹ لائن ورکرز، پچاس سال سےزائدعمراور کمزور قوت مدافعت والے افراد کو لگائی جائے گی تاہم بوسٹر ڈوز اور گذشتہ ڈوز کے درمیان چھ ماہ کا وقفہ لازمی قرار دیا تھا۔

بعد ازاں نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر نے بوسٹر ڈوز کے لیے عمر کی حد میں کمی کا کرتے ہوئے کہا تھا کہ 30 سال سے زائد عمر کے افراد بوسٹر ڈوز لگوا سکیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں