The news is by your side.

Advertisement

نواز شریف کی کنڈیشن اتنی سنجیدہ نہیں کہ بیرون ملک علاج کے لیے بھیجا جائے،شوکت جاوید

لاہور : نگراں وزیر داخلہ پنجاب کا کہنا ہے کہ نواز شریف کی کنڈیشن اتنی سنجیدہ نہیں کہ بیرون ملک علاج کے لیے بھیجا جائے، پاکستان میں بھی ڈاکٹر اچھے ہیں، ہرطرح کا علاج ہوسکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق نگراں وزیر داخلہ پنجاب شوکت جاوید نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے نواز شریف کی صحت کے حوالے سے کہا کہ سچ ہے نوازشریف اسپتال میں علاج سے ہچکچا رہے تھے۔

شوکت جاوید کا کہنا تھا کہ نواز شریف کا علاج جاری ہے، کنڈیشن اتنی سنجیدہ نہیں کہ بیرون ملک علاج کے لیے بھیجا جائے،ان خبروں میں کوئی صداقت نہیں، ضرورت پڑی تو مرض کی ہسٹری باہر سے پاکستان منگوائی جاسکتی ہے۔

نگراں وزیر داخلہ پنجاب نے کہا کہ پاکستان میں بھی ڈاکٹر اچھے ہیں، ہر طرح کا علاج ہو سکتا ہے، رپورٹس کے مطابق نواز شریف جلد ٹھیک ہو جائیں گے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ مریم کی جانب سےنواز شریف کی تیمارداری کے لیےدرخواست نہیں ملی ، درست لگتا ہے کہ نواز شریف جلد ٹھیک ہوکر جیل جانا چاہتے ہیں۔

شوکت جاوید نے کہا کہ آئین اور قانون کے مطابق آئندہ دس دنوں میں قومی و صوبائی اسمبلیوں کا اجلاس طلب کرلیا جائے گا۔

خیال رہے کہ پمز کارڈک سینٹر میں زیر علاج سابق وزیراعظم نواز شریف کی صحت بتدریج بہتری کی طرف مائل ہے، ڈاکٹرز کی جانب سے نواز شریف کے متعدد کلینکل ٹیسٹوں کی رپورٹ پر تسلی کا اظہار کیا گیا ہے۔

کارڈیک سینٹر کے ڈاکٹرز کی ٹیم آج دوبارہ نوازشریف کا معائنہ کرے گی جبکہ ای سی جی سمیت نوازشریف کے تمام ٹیسٹ دوبارہ کیے جائیں گے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں