The news is by your side.

Advertisement

پنجاب میں بجلی کی غیراعلانیہ لوڈ شیڈنگ، حکومتی دعوے دھرے رہ گئے

لاہور/ فیصل آباد/ سیالکوٹ/ گوجرانوالہ/ ملتان : پنجاب میں لوڈ شیڈنگ کے حکومتی دعوے محض بیان ہی ثابت ہوئے، مختلف شہروں میں بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ نے عوام کا جینا دوبھر کردیا، یومیہ چھ سے بارہ گھنٹے بجلی نہ ہونے سے شہری ذہنی اذیت سے دوچار ہیں۔

تفصیلات کے مطابق حکومتی دعوؤں کے برعکس پنجاب کے بیشتر بڑے شہروں میں بجلی کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ جاری ہے، ملتان کے مختلف علاقوں میں6گھنٹےکی بجلی کی لوڈشیڈنگ کی جارہئی ہے۔

چراغ تلے اندھیرے کے مصداق وزیر مملکت پانی و بجلی عابد شیر علی کے شہر میں ہی بجلی غائب ہے، فیصل آباد کے شہری علاقوں میں 5سے 6گھنٹےبجلی کی لوڈشیڈنگ معمول بن چکی ہے، جبکہ دیہی علاقوں میں 8گھنٹے لوڈشیڈنگ سے مکین پریشان ہوگئے۔

گوجرانوالہ میں بھی بجلی کی غیر اعلانیہ عدم فراہمی سے عوام شدید مشکلات کا شکار ہوگئے، گوجرانوالہ کے شہری علاقوں میں4،دیہی علاقوں میں6گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کی جارہی ہے،۔

دوسری جانب ساہیوال کے دیہی علاقوں میں6،اور شہری علاقوں میں 4 گھنٹے بجلی غائب رہتی ہے، جبکہ اوکاڑہ کے شہری علاقوں میں 10، دیہی علاقوں میں 12 گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کی جارہی ہے۔

اس کے علاوہ چنیوٹ میں غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 10 سے 12 گھنٹے تک پہنچ گیا، عارف والا اور قریبی علاقوں میں یومیہ 10گھنٹے بجلی کی عدم فراہمی کے باعث عوام اس شدید گرمی میں بے بسی سے وقت گزار رہے ہیں۔

علاوہ ازیں گجرات میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا دورانیہ8گھنٹے تک پہنچ گیا ہے، نارووال کے شہری علاقوں میں 5 گھنٹے اور دیہی علاقوں میں 8 گھنٹے کی لوڈشیڈنگ معمول بن گئی جبکہ شیخوپورہ میں لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 12 گھنٹےتک جا پہنچا۔

پنجاب کے صنعتی شہر سیالکوٹ کے شہری علاقوں میں 4 سے 6گھنٹے جبکہ دیہی علاقوں میں6 سے 8 گھنٹے بجلی کی لوڈشیڈنگ پر شہری سراپا احتجاج ہیں، مرید کے میں بھی لوڈشیڈنگ کا دورانیہ 12 گھنٹے تک پہنچ گیا، عوام نے شدید گرمی کے موسم میں بجلی کی عدم فراہمی پر اپنے غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے ارباب اقتدار سے اپیل کی ہے کہ اپنے دعووں کو عملی جامہ پہناتے ہوئے عوام کی مشکلات کا سدباب کیا جائے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں