The news is by your side.

Advertisement

روسی صدر نے نابینا لڑکی کی خواہش پوری کردی

ماسکو: روس کے صدر ولادی میر پیوٹن نے نابینا لڑکی کی خواہش پوری کر کے سب کے دل جیت لیے۔

تفصیلات کے مطابق روس کی اٹھارہ سالہ ریجینا نامی نابینا لڑکی صحافت کا شعبہ اختیار کرنے کی خواہش مند ہے اُس نے اپنے کیریئر کے آغاز سے قبل روسی صدر کے انٹرویو کی خواہش ظاہر کی۔

پیوٹن کو جب اس بات کی اطلاع ہوئی تو وہ فوراً انٹرویو دینے کے لیے راضی ہوگئے اور پھر ریجینا کو صدارتی محل بلایا گیا۔

مزید پڑھیں: روسی صدر پیوٹن کا آسٹریا کی وزیر خارجہ کے ہمراہ رقص

روسی صدر نے نوجوان لڑکی سے ہاتھ ملا کر بتایا کہ وہ پیوٹن کے سامنے کھڑی ہے جس پر ریجینا کو یقین نہیں آیا، بعد ازاں روس کے سربراہ نے بچی کے سر پر ہاتھ پھیرا اور اُسے یقین آگیا۔

ولادی میر پیوٹن نے خوشگوار ماحول میں لڑکی سے ملاقات کی اور انٹرویو میں پوچھے جانے والے سوالات کے جواب بھی دیے۔

صدر کا منصب سنبھالنے کے بعد سے اب تک پیش آنے والی مشکلات کے حوالے سے روسی صدر نے کھل کر بات کی اور اپنے تجربات شیئر کیے۔

یہ بھی دیکھیں: روسی صدر کا سخت سردی میں برفیلے پانی میں‌ غوطہ، ویڈیو وائرل

انٹرویو کے اختتام پر لڑکی نے روسی صدر کا شکریہ ادا کرتے ہوئے انہیں چھونے کی خواہش کا اظہار کیا جس پر پیوٹن نے اُسے اجازت دی۔

پیوٹن نے ریجینا کے ہاتھ چومے اور اُس کے سر پر ہاتھ پھیرتے ہوئے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔

بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ریجینا کا کہنا تھا کہ ’انٹرویو کے وقت بہت گھبراہٹ ہورہی تھی مگر پیوٹن نے اعتماد بڑھایا اور حوصلہ افزائی کی‘۔ نابینا لڑکی کا کہنا تھا کہ اُس نے اپنے صحافتی کریئر کا آغاز کردیا اور اب وہ مستقبل میں مختلف نامور شخصیات کا انٹرویو لے گی۔

اپنی خواہش سے آگاہ کرتے ہوئے ریجینا کا کہنا تھا کہ میں نیوز کاسٹر اور تجزیہ نگار بننے کا ارادہ رکھتی ہوں، آج اپنے کیریئر کی پہلی سیڑھی پر چڑھ گئی اور اس سفر کو آئندہ بھی جاری رکھوں گی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں