ہم ناقابل تسخیر جوہری ہتھیار بنا چکے ہیں: پوتن نے حریفوں کے لیے خطرے کی گھنٹی بجا دی Putin
The news is by your side.

Advertisement

ہم ناقابل تسخیر جوہری ہتھیار بنا چکے ہیں: پوتن نے حریفوں کے لیے خطرے کی گھنٹی بجا دی

ماسکو: روسی صدر ولادی میر پوتن نے ایسے ناقابل تسخیر جوہری ہتھیار بنانے کا دعویٰ کیا ہے، جو دنیا کے کسی بھی حصے کو نشانہ بنا سکتے ہیں۔

دنیا کے طاقتور ترین شخص تصور کیے جانے والے روسی صدر کے اس سنسنی خیز دعویٰ نے امریکا کے لیے خطرہ کی گھنٹی بجا دی۔ انھوں نے کہا ، ہم ایسے ڈرون  تیار کر رہے ہیں، جنھیں آبدوز سے چھوڑا جا سکے گا اور یہ جوہری حملہ کرنے کی صلاحیت کے بھی حامل ہوں گے۔

یہ سنسنی خیز دعویٰ انھوں نے اپنے آخری صدارتی خطاب میں کیا۔ چند ہی روز میں ان کے چوتھے بار صدر منتخب ہونے کی توقع کی جارہی ہے۔ روس کے سرکاری ٹی وی چینل پر اپنی تقریر میں انھوں نے ان دو ہتھیاروں کی ویڈیوز بھی چلائیں، جنھیں بے بدل قرار دیا جارہا ہے۔ انھوں نے مزید کہا کہ روس کے اس نئے ہتھیار کو امریکی دفاعی نظام نہیں روک سکتا۔


پیوتن کا چوتھی بار صدر کے عہدے کے لیے انتخاب میں حصہ لینے کا فیصلہ


انھوں نے واضح طور پر کہا کہ ان کی جوہری طاقت امن کے لیے خطرہ نہیں، لیکن اگر کوئی روس کے خلاف جوہری ہتھیار استعمال کرے گام تو روس دوگنی طاقت سے اس کا جواب دے گا۔ عالمی میڈیا کے مطابق پوتن کی تازہ تقریر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے جوہری طاقت بڑھانے اور مزید جوہری ہتھیار بنانے کے بیان کا ردعمل ہے۔ تجزیہ کاروں کے نزدیک یہ ان کے سیاسی کیریر کی سخت ترین تقریر ہے۔


کیا چینی صدر دنیا کے طاقتور ترین شخص بننے والے ہیں؟


یاد رہے کہ گذشتہ دنوں چین سے بھی ایسی آئینی ترمیم کی بازگشت سنائی دی، جس کے بعد موجودہ چینی صدر شی جن پنگ کی مسند اقتدار پر 2030 تک گرفت مضبوط ہوجائے گی۔ کمیونسٹ پارٹی کی اس تجویز کو منظور کرنے کے بعد صدر شی جن پنگ چینی تاریخ کی مضبوط اور بااثر ترین شخصیت بن جائیں گے۔

چین اور روسی صدور کی اقتدار پر مضبوط گرفت اور خطے میں بڑھتے اثر سے امریکا سمیت پورے یورپ میں بے چینی پائی جاتی ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں