The news is by your side.

Advertisement

‘پاکستان کو ریڈلسٹ میں ڈالنا امتیازی سلوک ہے’

وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے کہا ہے کہ برطانیہ کی جانب سے پاکستان کو ریڈ لسٹ میں ڈالنا ‏امتیازی سلوک ہے۔

تفصیلات کے مطابق وزیر داخلہ شیخ رشید احمد سے برطانیہ کےپاکستان میں سفیر نے ملاقات کی ‏جس میں پاک برطانیہ تعلقات سمیت باہمی دلچسپی کے امور پر بات چیت کی گئی۔

وزیر داخلہ نے ڈیوک آف ایڈم برگ اور پرنس فلپ کی وفات پرافسوس کا اظہار کیا اور شاہی خاندان ‏سےاظہار تعزیت کیا۔

ملاقات میں دونوں ملکوں میں وطن واپسی اورمجرمان حوالگی سےمتعلق پیش رفت کا جائزہ کیا ‏گیا جب کہ نواز شریف کی ممکنہ پاکستان واپسی پر بھی بات چیت کی گئی۔

برطانیہ جانیوالے مسافروں کو کورونا کی وجہ سے ریڈ لسٹ میں ڈالنے پر گفتگو کی گئی۔ ملاقات ‏میں مجرمان کی حوالگی اور وطن واپسی کے معاہدوں کو جلد مکمل کرنےپر اتفاق کیا گیا جب کہ ‏معاہدےدونوں ملکوں کے مفادمیں ہیں، پیشرفت کو تیز کرنے پر اتفاق ہوا۔

برطانوی سفیر نے کہا کہ پاکستان کی ایف اےٹی ایف روڈمیپ عملدرآمد پر کارکردگی شاندار ہے، ‏ایف اے ٹی ایف کے معاملےپربرطانیہ پاکستان کی مکمل حمایت کرے گا۔

وفاقی وزیر داخلہ نے بتایا کہ پاکستان نےایف اےٹی ایف پر27میں سے24نکات پرمکمل عمل کیا، ‏پاک برطانیہ تعلقات دیرینہ ہیں،تعلقات کو قدرکی نگاہ سےدیکھتے ہیں تاہم پاکستان کو ‏کوروناپرریڈلسٹ میں ڈالنےپرہمیں بہت تشویش ہے، برطانیہ میں بسنےوالےپاکستانیوں میں ‏اضطراب پایاجاتاہے،ہمسایہ ملکوں میں کوروناتیزی سے پھیل رہاہے،پاکستان سے سلوک امتیازی ہے۔

برطانوی سفیر نے وضاحت دی کہ پاکستان کو ریڈلسٹ میں ڈالنےکا معاملہ یکسر امتیازی نہیں، ‏پاکستان سےبرطانیہ جانیوالے مسافروں کی تعداد سب سے زیادہ ہے اور برطانیہ جانیوالے مسافروں ‏میں کورونا مثبت کی شرح زیادہ ہے کورونا کیسزمثبت ہونےپرپاکستان کوریڈلسٹ میں ڈالا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں