site
stats
پاکستان

قندیل بلوچ کے بھائیوں کواشتہاری ملزم قراردلوانے کیلیے درخواست دائر

ملتان : سوشل میڈیا سے شہرت کی بلندیوں کو چھونے والی مقتولہ ماڈل گرل قندیل بلوچ کے قتل میں ملوث اس کے دو بھائیوں کو اشتہاری ملزم قراردلوانے کے لیے پولیس نے ملتان کی مقامی عدالت میں درخواست دائر کی ہے۔

درخواست میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ دونوں ملزمان تفتیش کے سلسلے میں پولیس کے سامنے پیش نہیں ہو رہے اس لیے اُن کے وارنٹ گرفتاری جاری کرنے کے ساتھ ساتھ اُنھیں اشتہاری قرار دیا جائے۔

درخواست میں قندیل بلوچ کے جن دو بھائیوں کا ذکر کیا گیا ہے ان میں سے پہلا اسلم شاہین جو پاک فوج میں نائب صوبیدارکے عہدے پرفائزہے اورمقامی پولیس کے مطابق وہ ان دنوں کراچی میں تعینات ہے۔

دوسرے ملزم عارف کے اس واقعے میں ملوث ہونے کے بارے میں مرکزی ملزم اورقندیل کے بھائی وسیم نے پولیس کو دوران تفتیش بتایا تھا۔

ملزم اسلم شاہین کو مقتولہ قندیل کے والد نے اس مقدمے میں نامزد بھی کیا ہوا ہے جبکہ ملزم عارف کے بارے میں بتایا جاتا ہے کہ وہ سعودی عرب میں تھا تاہم قندیل بلوچ کے قتل کے موقع پر وہ پاکستان میں ہی موجود تھا۔

مزید پڑھیں : ماڈل قندیل بلوچ کو قتل کر دیا گیا

دوسری جانب ملزم عارف کی گرفتاری کے لیے تفتیشی ٹیم نے محتلف جگہوں پر چھاپے بھی مارے ہیں لیکن ابھی تک اس میں کامیابی نہیں ملی۔

پولیس کے مطابق ملزم اسلم شاہین کو قندیل بلوچ کے قتل کے مقدمے میں تفتیش کے لیے پولیس کے سامنے پیش ہونے کے لیے متعدد بار نوٹس بھیجے گئے لیکن وہ پیش نہیں ہوا۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top