site
stats
پاکستان

قندیل بلوچ قتل کیس،گرفتار ملزمان کے بیانات کی تصدیق

ملتان : سوشل میڈیا سے شہرت پانے والی ماڈل قندیل بلوچ کے قتل کیس میں گرفتار ملزمان کے بیانات کی تصدیق ہوگئی، ملزمان کے بیانات میں کوئی تضاد نہیں، بھائی وسیم نے قندیل کا گلادبا کر اس کی جان لی۔

قندیل قتل کیس کی تحقیقات میں پیشرفت ہوئی، پولی گرافک ٹیسٹ رپورٹ نے گرفتار ملزمان کے بیانات کی تصدیق کردی، پولی گرافک ٹیسٹ رپورٹ کے مطابق ملزمان وسیم اور حق نواز کے بیانات میں مماثلت ہے۔


 مزید پڑھیں : قندیل بلوچ کو نشہ آور دوا دے کر قتل کیا گیا، پولی گرافک ٹیسٹ رپورٹ


 

ملزم حق نواز نے مقتولہ کی ٹانگیں پکڑیں اور بھائی وسیم نےگلا دبایا، جس کی وجہ سے قندیل کو مزاحمت کا موقع نہیں ملا، دونوں ملزمان جس ٹیکسی میں آئے، اس کے ڈرائیور کو کھانا لینے کے بہانے بھیج دیا تھا۔

قندیل کی موت کا یقین ہونے کے بعد دونوں ملزمان اسی ٹیکسی میں روانہ ہوگئے تھے۔


 مزید پڑھیں : مفتی عبدالقوی ’قندیل بلوچ قتل کیس ‘میں ملزم نامزد


دوسری جانب پولیس نےقندیل کےوالد کی درخواست پر مفتی عبدالقوی کو بھی مقدمے میں نامزد کر رکھا ہے، پولیس کی جانب سے مفتی عبدالقوی کی گرفتاری کا امکان ظاہر کیا جارہا ہے ، پولیس کا موقف ہے کہ مفتی قوی سےقندیل بلوچ کے قتل سے متعلق پوچھ گچھ کی جائے گی۔


مزید پڑھیں : ماڈل قندیل بلوچ کو قتل کر دیا گیا


واضح رہے معروف ماڈل اور ممتاز شوبز شخصیت قندیل بلوچ کو اُن کے گھر واقع ملتان میں قتل کردیا گیا ،قندیل بلوچ اپنے والدین سے ملنے گھر آئی ہوئیں تھیں کہ رات سوتے ہوئے اُن کے بھائی نے وسیم نے گلا دبا کر قندیل بلوچ کو ہلاک کرکے گاؤں فرار ہو گیا تھا جہاں پولیس نے چھاپہ مار کارروائی میں ملزم کو گرفتار کرلیا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top