قندیل بلوچ کیس ، ٹیکسی ڈرائیور نے پولی گرافک ٹیسٹ میں سچ اگل دیا -
The news is by your side.

Advertisement

قندیل بلوچ کیس ، ٹیکسی ڈرائیور نے پولی گرافک ٹیسٹ میں سچ اگل دیا

ملتان : قندیل بلوچ قتل کیس میں گرفتارٹیکسی ڈرائیور نے ملزمان کو فرار ہونے میں مدد دینے کا اعتراف کرلیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق قندیل بلوچ کیس کی تحقیقات میں ڈرامائی پیشرفت سامنے آئی، قتل کا علم ہونے کے باوجود ملزمان کو فرار ہونے میں مدد دی، ٹیکسی ڈرائیور نے جھوٹ پکڑنے والی مشین سے ٹیسٹ میں سچ اگل دیا۔

ملزم ڈرائیور عبدالباسط نے پہلے بیان دیا تھا کہ اسے واردات کا علم نہیں تھا لیکن پولی گرافک ٹیسٹ میں انکشاف کیا کہ اسے واردات کا علم ملزمان کو ڈی جی خان واپس لےجاتے وقت ہوگیا تھا لیکن پھر بھی اس نے ملزمان کو فرار ہونے میں نہ صرف مدد کی بلکہ خود بھی روپوش ہوگیا اور اپنا موبائل فون بھی بند کردیا۔


 مزید پڑھیں : قندیل بلوچ کو نشہ آور دوا دے کر قتل کیا گیا، پولی گرافک ٹیسٹ رپورٹ


اس سے قبل قندیل بلوچ کے قتل کیس میں گرفتار ملزمان کے بیانات کی تصدیق ہوگئی تھی، ملزمان کے بیانات میں کوئی تضاد نہیں، بھائی وسیم نے قندیل کا گلادبا کر اس کی جان لی۔ملزم حق نواز نے مقتولہ کی ٹانگیں پکڑیں اور بھائی وسیم نے گلا دبایا، جس کی وجہ سے قندیل کو مزاحمت کا موقع نہیں ملا، دونوں ملزمان جس ٹیکسی میں آئے، اس کے ڈرائیور کو کھانا لینے کے بہانے بھیج دیا تھا، قندیل کی موت کا یقین ہونے کے بعد دونوں ملزمان اسی ٹیکسی میں روانہ ہوگئے تھے۔


 مزید پڑھیں :  ماڈل قندیل بلوچ کو قتل کر دیا گیا


واضح رہے معروف ماڈل اور ممتاز شوبز شخصیت قندیل بلوچ کو اُن کے گھر واقع ملتان میں قتل کردیا گیا ،قندیل بلوچ اپنے والدین سے ملنے گھر آئی ہوئیں تھیں کہ رات سوتے ہوئے اُن کے بھائی نے وسیم نے گلا دبا کر قندیل بلوچ کو ہلاک کرکے گاؤں فرار ہو گیا تھا جہاں پولیس نے چھاپہ مار کارروائی میں ملزم کو گرفتار کرلیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں