قطر: جنسی زیادتی اور قتل کے مجرم کو 5 برس قید کی سزا sexual abuse and murder
The news is by your side.

Advertisement

قطر: جنسی زیادتی اور قتل کے مجرم کو 5 برس قید کی سزا

برطانوی لڑکی کے اہل خانہ نے عدالت کے فیصلے کو غیر منصفانہ قرار دے دیا

دوحہ : بیٹی کو جنسی زیادتی کے بعد لاش کو جلانے والے مجرم کو 5 برس قید کی سزا سنانے پر مقتول کی والدہ نے قطری عدلیہ کو ظالم کا ساتھی قرار دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق قطری عدالت نے برطانوی لڑکی کو جنسی زیادتی کے بعد قتل کرنے کے جرم میں قطری شہری کو سزا سناتے ہوئے 5 سال کےلیے جیل بھیجنے کا حکم دے دیا تو مقتول کے اہل خانہ نے احتجاج کیا۔

عرب خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ قطری عدالت کی جانب سے لڑکو زیادتی کے بعد قتل کرنے اور جلانے کے والے مجرم کو غیر منصفانہ سزا دینے پر برطانوی خاتون نے شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔

عرب میڈیا کا کہنا ہے کہ مجرم ھاشم خمیس الجابر نے 24 سالہ لورین پیٹرسن نامی برطانوی لڑکی کو سنہ 2013 میں جنسی زیادتی کے بعد قتل کرکے اس کی لاش کو نذر آتش کردیا گیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ قطری شہری نے مقتول کی لاش کو صحرا میں نذر آتش کیا تھا جس کے بعد قطر کی فوج داری عدالت نے اسے سزائے موت سنائی تھی لیکن مجرم نے سزا کی خلاف کی اور عدالت نے اپیل پر سماعت کرتے ہوئے سزا کو 10 برس قید میں تبدیل کردیا۔

عرب میڈیا کا کہنا ہے کہ قطر کی فوجداری عدالت نے مجرم کی سزا 10 برس سے کم کرکے 5 برس کردی جس پر مقتول کے اہل خانہ نے عدالت کو ظالم کا ساتھی قرار دیتے ہوئے کہا تھا کہ جنسی زیادتی کرکے قتل کرنے اور لاش کو جلائے جانے کے اتنے سنگین جرائم میں بھی معمولی سزا دینا کہاں کا انصاف ہے۔

مقتول کی والدہ کا کہنا تھا کہ سنگین جرائم میں ملوث شخص کو بچانا قطری عدلیہ کے چہرے پر بد نما داغ ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں