The news is by your side.

فٹبال ورلڈ کپ: بطور سیاح قطر جانے والوں کے لیے ضروری معلومات

فیفا ورلڈ کپ کی وجہ سے اس وقت قطر عالمی توجہ کا مرکز بنا ہوا ہے، اگر آپ بطور سیاح قطر جا رہے ہیں تو آپ کو چند چیزوں کی پہلے سے معلومات ہونی چاہیئں۔

قطر میں فیفا فٹ بال ورلڈ کپ ہو رہا ہے جس کے لیے شائقین فٹبال بھی خلیجی ریاست جانے کی تیاری کر رہے ہیں، دوحا حکومت نے ان مقابلوں کے دوران شائقین فٹ بال کے لیے چند قوانین وضع کیے ہیں۔

قطر ایک اسلامی ملک ہے اس لیے اگر آپ بھی اس ملک میں سفر کرنے والے ہیں تو آپ کو ان کچھ اضافی اصول و ضوابط پر  عمل کرنا ہوگا۔

کرونا سے متعلق قوانین

اگر آپ بطور سیاح قطر جا رہے ہیں اور آپ کی عمر پانچ سال سے زیادہ ہے تو آپ کو پی سی آر ٹیسٹ کروانا ہوگا جو 48 گھنٹے سے یادہ پرانا نہیں ہونا چاہیے۔

یا آپ ایک کوئک اینٹیجن ٹیسٹ بھی کروا سکتے ہیں لیکن وہ بھی 24 گھنٹے سے زیادہ پرانا نہیں ہونا چاہیے، قطر میں داخلے کے لیے خود سے کیے گئے ٹیسٹ کو تسلیم نہیں کیا جائے گا۔

خلیجی ملک میں داخلے سے تین دن قبل آپ کو ایک داخلہ فارم پُر کرنا ہوگا جو آپ آن لائن بھی آپ لوڈ کر سکتے ہیں یا ملک میں داخلے کے وقت بھی پیش کر سکتے ہیں۔

قطر میں داخل ہونے والے سیاح کو اپنے سیل فون پر قطری کرونا ٹریکنگ ایپ ”ایتھراز‘‘ کو ڈاؤن لوڈ کرنا ہوگا، جب آپ عجائب گھروں، ہوٹلوں، ریستوراں، شاپنگ سینٹرز وغیرہ میں داخل ہوں گے تو ایپ کو چیک کیا جائے گا۔

قطر میں ماسک لگانے پر کوئی پابندی نہیں ہے، لیکن اگر آپ پبلک ٹرانسپورٹ کا استعمال کر رہے ہیں تو اس صورت میں ماسک لگانا لازم ہے۔

بہت سے فٹ بال شائقین کے لیے سب سے اہم سوالات میں سے ایک یہ ہوتا ہے کہ کیا عوامی مقامات پر شراب نوشی کی جا سکتی  ہے؟ کیوں کہ قطر میں شراب کو نہ تو درآمد کرنے کی اجازت ہے اور نہ ہی یہ دکانوں میں خریدی جا سکتی ہے، اس لیے صرف ہوٹلوں میں ایسا کیا جا سکتا ہے، استثنیٰ کے تحت اسٹیڈیم کے احاطے میں کھیل سے پہلے اور بعد میں بھی نان الکوحل بیئر ہی دستیاب ہوگی۔

شاپنگ کب اور کہاں کی جائے؟

قطر میں جمعے کو چھٹی ہوتی ہے اور اتوار کو اس ملک میں ایک عام کام کا دن ہوتا ہے، جمعہ کی صبح تمام دکانیں بند رہتی ہیں، تاہم ان میں سے اکثر ریستوران اور دوکانیں جمعے کی نماز کے بعد دوبارہ کھل جاتی ہیں۔

 اپنے کپڑوں کا انتخاب کرتے وقت کن چیزوں پر غور کرنا چاہیے؟

قطر میں ’’قدامت پسند لباس‘‘پہننا ضروری ہے، قدامت پسند لباس کے بارے میں بہت سے مختلف خیالات ہیں۔ قطر ایک اسلامی ملک ہے یہاں شارٹ اسکرٹ یا شارٹس اور جسم نظر آنے والے باریک لباس نہیں پہنے جاتے انہیں معیوب سمجھا جاتا ہے۔

 اگر آپ کسی ساحل پر نہانا چاہتے ہیں تو تب بھی آپ کو وہاں نہانے کے لیے متعلقہ ڈریس کوڈ کا ضرور خیال رکھنا ہوگا۔

گفتگو کرتے ہوئے کن اشاروں سے گریز کرنا ضروری ہے؟

قطر میں شہادت کی انگلی سے کسی کو اشارہ کرکے بلانا برا سجھا جاتا ہے، اگر کوئی اس انگلی کو گُھماتے ہوئے ویٹر کو بلائے تو وہ اچھی طرح سروس نہیں دے گا۔

سلام کے بعد ہاتھ ملانا

سلام کے بعد مردوں کی طرف سے ہاتھ ملانے کی پیشکش کو خواتین عموماً نظر انداز کر دیتی ہیں، اسی طرح کوئی قطری مرد کسی خاتون کی جانب سے ہاتھ ملانے کی پیشکش کو بھی رد کر سکتا ہے، کیوں کہ اسلامی ممالک میں مردوں کا خواتین سے ہاتھ ملانا ممنوع ہے، تاہم مرد دوسرے مردوں اور عورتیں دوسری عورتوں سے ہاتھ ملا سکتی ہیں۔

قطر کے امیر تمیم بن حمد الثانی نے ورلڈ کپ میں ہم جنس پرستوں سمیت تمام لوگوں کو خوش آمدید کہا ہے، لیکن وہاں غیر ازدواجی جنسی تعلقات بھی حرام ہیں اور اس عمل کی سات سال کی قید کی سخت سزا دی جا سکتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں