The news is by your side.

Advertisement

تلور شکار، قطری شہزادے فصلیں تباہ کردیتے ہیں، مقامی افراد کی شکایت

اسلام آباد : تلور کے شکار کے لیے آنے والے قطری شہزادوں کی قافلوں کی صورت آمد ورفت اور شکار کھیلنے کے باعث مقامی افراد کی فصلیں تباہ ہوجاتی ہیں جس کا حکومت کوئی معاوضہ بھی نہیں دیتی ہے.

اے آر وائی نیوز کے پروگرام دی رپورٹرز میں قطری شہزادوں کی پاکستان آمد اور نایاب پرندے تلور کے شکار کے حوالے سے ایک رپورٹ پیش کی گئی جس میں مقامی افراد نے شکایتوں کے انبار لگا دیئے.

اے آر وائی سے بات کرتے ہوئے مقامی افراد نے شکایت کی کہ قطری شہزادے چالیس اور پچاس گاڑیوں کے قافلے میں شکار پر نکلتے ہیں اور راستے میں آنے والے کھیتوں کو روندیا دیا جاتا ہے جس سے کسانوں کی سال بھر کی کی گئی محنت چند منٹوں میں ضائع ہوجاتی ہے.


‘‘وفاقی حکومت، قطری شہزادوں کو شکار کی اجازت’’


مقامی افراد نے مزید کہا کہ فصلیں تباہ ہونے کے علاوہ قطری شہزادوں کے قافلے تلے کچلے جانے والے مال مویشی کا نقصان علیحدہ ہے، ہم غریب لوگ ہیں اور اتنے نقصان کے باوجود حکومت ہمارے نقصان کا مداوا نہیں کرتی ہے اور نہ ہی قطری شہزادے کوئی معاوضہ دیتے ہیں.


‘‘غریب کسانوں کا قطری شہزادوں کے خلاف احتجاج’’


واضح رہے پاکستان میں نایاب پرندوں کے شکار پر پابندی عائد ہے تا ہم وفاقی حکومت کی جانب سے قطری شہزادوں کو ہرسال کی طرح اس سال بھی شکار کرنے کے اجازت نامے جاری کیئے گئے تھے.

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں