The news is by your side.

Advertisement

سابق چیئرمین نیب کے گودام سے برآمد ہونے والی لگژری گاڑیاں قطری خاندان کی نکلیں

راولپنڈی: قومی احتساب بیورو کے سابق چیئرمین سیف الرحمان کے گودام سے برآمد ہونے والی 21 لگژری گاڑیاں قطری سفارت خانے کی نکلیں۔

تفصیلات کے مطابق سابق چیئرمین نیب سیف الرحمن کےگودام پر گزشتہ روز روالپنڈی کے محکمہ کسٹم نے چھاپہ مارا جس کے دوران وہاں سے غیر قانونی طور پر پاکستان لائی گئی 21 لگژری گاڑیاں برآمد ہوئی تھیں۔

کسٹم حکام نے انکوائری شروع کی تو معلوم ہوا کہ برآمد ہونے والی گاڑیاں قطری سفارت خانے کی ہیں، ذرائع کے مطابق برآمد ہونے والی گاڑیوں کو بغیر ڈیوٹی پاکستان لایا گیا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ نان کسٹم پیڈ گاڑیوں کی تعداد 21 ہے جو قطری خاندان کی ملکیت ہیں۔مذکورہ گاڑیاں شاہی خاندان کے افراد پاکستان میں دوران شکار استعمال کرتےہیں۔

پڑھیں: قطری شہزادے سو تلورشکارکرسکیں گے

مذکورہ گاڑیاں حکومت پاکستان کی اجازت سے پارک کی گئیں۔

ذرائع کے مطابق قطری سفارت خانے نےگاڑیوں کےاستعمال میں قواعد کی خلاف ورزی کی، 25 کروڑ  روپےمالیت کی نان کسٹم پیڈگاڑیاں ضبط کیےجانےکاامکان ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز محکمہ کسٹم نے راولپنڈی میں واقع سابق چیئرمین نیب کی فکیٹری پر چھاپہ مارا تھا جس کے دوران وہاں 21 این سی پی گاڑیاں برآمد کی گئی تھیں، ذرائع کا کہنا تھا کہ مذکورہ گاڑیاں سیف الرحمان کے قریبی دوست کی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: غریب کسانوں کا قطری شہزادوں کے خلاف احتجاج

واضح رہے کہ موسم سرما میں تلور پرندے بڑی تعداد میں پاکستان کا رخ کرتے ہیں جن کے شکار پر حکومت کی جانب سے پابندی عائد کی گئی ہے، خلیجی اور عرب ریاستوں کے شاہی خاندانوں کے افراد ہر سال تواتر کے ساتھ پاکستان آکر غیر قانونی طور پر شکار کرتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں